غزہ: شجاعیہ کالونی کی جھڑپوں کے بعد مارے گئے اسرائیلی فوجیوں کی تعداد 115 ہوگئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیلی فوج اور القسام بریگیڈز کے درمیان غزہ کی پٹی کے علاقے شجاعیہ کالونی میں پرتشدد تصادم جاری ہے۔ زمینی کارروائی کے آغاز سے اب تک اسرائیلی فوج کے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 115 ہو گئی ہے۔

اخبار ’’یدیعوت احرونوت‘‘ کے مطابق اسرائیلی فوج ابھی تک الشجاعیہ کی تمام عمارتوں کو کنٹرول کرنے میں کامیاب نہیں ہوسکی ہے۔ خاص طور پر چونکہ القسام بریگیڈز کو پڑوسی کالونیوں کی حمایت بھی حاصل ہے۔ اسرائیلی زمینی افواج کی موجودگی کے دوران فضائی مدد بھی ناممکن رہی۔

بدھ کو اسرائیلی فوج نے تسلیم کیا کہ گولانی بریگیڈ کے کمانڈر اور سپاہی غزہ شہر کے مشرق میں واقع شجاعیہ کالونی میں القصبہ کے علاقے میں فلسطینی جنگجوؤں کے ساتھ گرما گرم لڑائی کے دوران مارے گئے ہیں۔ فوج نے ایک بیان میں کہا کہ گولانی بریگیڈ کے فوجیوں نے شجاعیہ کالونی میں گہری لڑائی لڑی ہے۔ لڑائی میں علاقے میں جنگجوؤں اور ان کے ارکان کے بنیادی ڈھانچے کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

بیان میں یہ بھی کہا گیا کہ فلسطینی جنگجو شہری عمارتوں اور زیر زمین سرنگوں کے نیٹ ورک کے اندر سے لڑ رہے ہیں۔ انہوں نے حملہ آور اسرائیلی فورسز کو ایک رہائشی عمارت کے اندر سے دھماکہ خیز مواد اور گولیوں سے نشانہ بنایا۔

فوج نے اپنے بیان میں کہا کہ فیلڈ کمانڈرز زخمی فوجیوں کی مدد کے لیے آگے آئے جس کی وجہ سے کمانڈرز اور فوجی اس وقت ہلاک ہوئے جب وہ عمارت میں موجود فورسز کو مدد فراہم کر رہے تھے اور بچا رہے تھے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ 36ویں ڈویژن کے کمانڈر نے واقعات ختم ہونے کے بعد گولانی بریگیڈ کے رہنماؤں کے ساتھ صورتحال کا جائزہ لیا۔

اسرائیلی فوج نے شمالی غزہ کی پٹی میں جاری لڑائیوں کے دوران ایک افسر اور ایک فوجی کی ہلاکت کا اعلان بھی کیا۔ اس سے قبل جھڑپوں اور دیگر کارروائیوں میں آٹھ افسران اور فوجیوں کی ہلاکت کے اعلان کیا گیا تھا۔ اس کے علاوہ فوج نے اعلان کیا کہ غزہ کی پٹی پر زمینی حملے کے آغاز سے اب تک 115 فوجی مارے جا چکے ہیں۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان ڈینیئل ہگاری نے کہا کہ فوج نے گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران غزہ کی پٹی میں حماس کے 250 ٹھکانوں پر بمباری کی ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ اسرائیلی فوج نے ایک مسلح سیل کو نشانہ بنایا جو غزہ کی پٹی سے اسرائیل کی طرف راکٹ داغنے کا ارادہ رکھتا تھا۔ انہوں نے حماس کے بنیادی ڈھانچے اور تنصیبات کو نشانہ بنانے کا بھی اعلان کیا۔

واضح رہے کہ حماس کو ختم کرنے کے مقصد سے غزہ کی پٹی پر اسرائیلی حملے کے نتیجے میں گذشتہ اکتوبر 2023 کی ساتویں تاریخ سے اب تک کم از کم 18,205 فلسطینی ہلاک ہو چکے ہیں جن میں بہت سے بچے بھی شامل ہیں۔ 50 ہزار سے زیادہ فلسطینی زخمی ہو چکے ہیں۔

اقوام متحدہ اور غزہ میں وزارت صحت کے مطابق اس تنازع کی وجہ سے 85 فیصد لوگوں نے نقل مکانی کی ہے۔ آبادی کو بھوک اور بیماریوں کا سامنا ہے۔ منگل کو اسرائیل نے غزہ کی پٹی میں دو یرغمالیوں کی لاشیں برآمد ہونے کے بعد 134 قیدیوں میں سے 19 کی موت کا اعلان کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں