دمشق کے قریب اسرائیلی میزائل حملے میں دو شامی فوجی زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام کی وزارتِ دفاع نے سرکاری میڈیا پر جاری کردہ ایک بیان میں کہا کہ اتوار کو دمشق کے قریب اہداف پر اسرائیلی فضائی حملوں میں دو شامی فوجی زخمی ہو گئے۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی سانا نے بیان کا حوالہ دیتے ہوئے کہا، "رات 22:05 (1905 جی ایم ٹی) کے قریب اسرائیلی دشمن نے مقبوضہ گولان کی پہاڑیوں سے فضائی جارحیت کی جس میں دارالحکومت دمشق کے قریب کئی علاقوں کو نشانہ بنایا گیا۔"

وزارت نے کہا کہ "دو فوجی زخمی ہوئے" اور شام کے طیارہ شکن دفاع نے کئی اسرائیلی میزائلوں کو روک دیا۔

دمشق کے قریب اے ایف پی کے ایک نامہ نگار نے بمباری کی آوازیں سننے کی اطلاع دی۔

برطانیہ میں مقیم ایک جنگی مانیٹر نے کہا کہ اسرائیلی طیارے نے دارالحکومت کے جنوب میں "سیدہ زینب کے قریب شامی حکومت کے طیارہ شکن دفاع کے ساتھ ساتھ (ایرانی حمایت یافتہ لبنان کی) حزب اللہ کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا۔"

شام میں ذرائع کے نیٹ ورک پر انحصار کرنے والے آبزرویٹری نے مزید کہا، حملوں کے بعد ایمبولینس گاڑیاں جائے وقوعہ پر پہنچ گئیں۔

2011 میں شام کی خانہ جنگی شروع ہونے کے بعد سے اسرائیل نے اپنے شمالی ہمسایہ پر سینکڑوں فضائی حملے کیے ہیں جن میں بنیادی طور پر ایران کی حمایت یافتہ افواج اور لبنانی حزب اللہ کے مزاحمت کاروں کے ساتھ ساتھ شامی فوج کے مراکز کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

لیکن اسرائیل اور حزب اللہ کے اتحادی حماس کے درمیان 7 اکتوبر کو شروع ہونے والی جنگ کے بعد سے اس نے حملے تیز کر دیئے ہیں۔

اس کے بعد سے اسرائیل اور حزب اللہ کے درمیان سرحد پار سے باقاعدہ فائرنگ ہوتی رہی ہے۔

آبزرویٹری نے اس وقت اطلاع دی تھی کہ 10 دسمبر کو حزب اللہ کے دو مزاحمت کار اور گروپ کے ساتھ کام کرنے والے دو شامی محافظ ضلع سیدہ زینب میں اسرائیلی حملوں میں جاں بحق ہو گئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں