نئی عالمی منزل کے ساتھ "العلا صحرا" نمائش کی تیاریاں عروج پر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے مقامی اور بین الاقوامی معاصر فنکاروں کے فن پاروں کے ساتھ "العلا ڈیزرٹ" نمائش کا تیسرا ایڈیشن آئندہ سال نو فروری سے 23مارچ تک منعقد ہو رہا ہے۔

یہ نمائش العلا کے غیر معمولی صحرائی منظر نامے، علاقے کے قدرتی اور ثقافتی وتخلیقی مرکز کے طور پر متعارف ہونے کے ساتھ منعقد ہو رہی ہے۔

نمائش میں حصہ لینے والے آرٹسٹوں کے آرٹ ورک پر مشتمل 9 فروری سے 23 مارچ 2024ء تک "غائب کی حاضری کے" کے عنوان کے تحت منعقد کی جائے گی۔

یہ آرٹسٹ مختلف مقامات پران خیالات کو تلاش کرنے کی کوشش کرتے ہیں جو آنکھوں کو نظر نہ آنے والی چیزوں کے گرد گھومتے ہیں۔ اس میں صحرائے وادی فن، ایک ریلوے اسٹیشن، ایک فری کار پارک۔ حرہ العویرض اورالمنشیہ شامل ہیں۔

نمائش ہرکسی کے لیے آزادانہ طور پر دستیاب ہے۔ اس کا مقصد العلا آرٹس فیسٹیول کے واقعات کو اجاگر کرنا اور 2026ء میں العلا میں کھلنے والے ایک اور اقدام کی راہ ہموار کرنے میں بھی اہم کردار ادا کرے گی۔

یہ نمائش زمینی فنون کے لیے ایک مستقل عالمی منزل بننے کے لیے تیارہے۔ گیلری اورآرٹ ویلی زمین کی تزئین کے وسط میں آرٹ کی طرف رائل کمیشن فار العلا کے وژن کی مثالیں ہیں کیونکہ یہ ایک تاریخی ثقافتی مقام ہے اور اسےمملکت میں فروغ پزیر آرٹ سین کا مرکز سمجھا جاتا ہے۔

نمائش کی آرگنائزنگ ٹیم کی ایک رکن مایا الخلیل نےکہا کہ العلا گورنری ایک تاریخی عمارت ہے جس میں وقتی اور مقامی ادوار کا مرکزہے،اس کا تصور بھی نہیں کیا جا سکتا۔ انہوں نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہا کہ نمائش فنکاروں کو چیلنج کرتی ہے کہ تاکہ اپنے فنکارانہ تخیلات کو ترتیب دیں۔

نمائش کے منتظمین میں شامل مارسیلو ڈینٹس نے زور دے کرکہا کہ صحرا جسے نمائش میں شامل کیا گیا ہے ایک خالی اوروسیع عریض میدان ہے جو آہستہ آہستہ اپنے وجود کی تہوں کو ظاہر کرتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ پرتیں بدلتے ہوئے خطوں، وقت کی حرکت، زندگی کے ثبوت اور آب و ہوا کی تبدیلی کی طاقت کے ذریعے ظاہر ہوتی ہیں۔ نمائش میں فنکاروں سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ بے مثال سائز کی منفرد کام کی جگہ پر اصل کام تخلیق کریں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں