سعودی عرب میں جدید سہولیات سے آراستہ ایمبولینس سروس ’طمیہ‘ کیا ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی ہلال احمر اتھارٹی نے انکشاف کیا ہے کہ مشرق وسطیٰ میں اپنی نوعیت کی پہلی ایمفیبیئس ایمبولینس اور ریسکیو گاڑی جسے "طمیہ" کے نام سے جانا جاتا ہے نے الریاض اور مکہ مکرمہ کے شہروں کے ساتھ ساتھ جنوبی سعودی عرب اپنی خدمات شروع کردی ہیں۔ جلدہی یہ ایمبولینس سروس سعودی عرب کے دیگر شہریوں میں بھی دستیاب ہوں گی۔

سعودی ہلال احمر اتھارٹی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ نیٹ کو بتایا اس نے گذشتہ سال حج سیزن کے دوران "طمیہ" ایمبولینس سروس کا آغاز کیا تھا، جو 1444 ھ کے حج سیزن میں ایک کامیاب تجربہ ثابت ہوئی۔

طمیہ

اس کے بعد فیصلہ کیا گیا کہ اس سروس کی مملکت کے مختلف علاقوں میں زیادہ رسائی کو یقینی بنایا جا سکے اور روایتی ایمبولینس سروس کو جدید خطوط پر استوار کیا جا سکے۔

سعودی ریڈ کریسنٹ اتھارٹی کے محکمہ ٹرانسپورٹ کے ڈائریکٹر فارس الروقی نے بتایا کہ "طمیہ" گاڑی ایک ایمفیبیئس ایمبولینس اور ریسکیو گاڑی ہے، اور یہ مشرق وسطیٰ میں اپنی نوعیت کی پہلی ایمبولینس ہے۔ اس میں موجود صلاحیتوں میں انتہائی دشوار گزار مقامات تک پہنچنے کے ساتھ ساتھ ریسکیو اور ایمبولینس مشنز کو انجام دینے کی صلاحیت بھی۔ یہ یہ روایتی ایمبولینس گاڑیوں کے بجائے ابتدائی طبی امداد اور زخمیوں کو نکالنے کے لیے ضروری سامان سے بھی لیس ہے۔

انہوں نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کے ساتھ ٹیلی فون پر بات کرتے ہوئے کہا کہ " طمیہ کیچڑ یا پانی والے علاقوں یا ان علاقوں تک بھی پہنچ سکتی ہے۔ اس میں بہ یک وقت دو مریضوں کو لے جانے کی صلاحیت ہے اور ڈرائیور سمیت 6 افراد کے بیٹھنے کی سہولت موجود ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں