اسرائیلی بمباری سے کرم شالوم راہداری کے سربراہ سمیت چار ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

دورز قبل امدادی سامان کی ترسیل کے لیے کھولی گئی کرم شالوم راہداری بھی اسرائیلی بمباری کی زد میں آگئی۔ جمعرات کے روز پونے والی اس بمباری سے فلسطین کی طرف کے راہداری کے ڈائریکٹر باسم غابین تین دوسرے افراد کے ساتھ اس وقت ہلاک ہوگئے جب اسرائیلی جنگی طیاروں نے راہداری کے انفراسٹرکچر کو نشانہ بنایا۔

اس امر کی اطلاع فلسطینی وزارت صحت نے اطلاع دی ہے۔ اسرائیلی فوج اور کوگیٹ جو کہ فلسطینی سول افئیر کی ذمہ دارہے نے اس بمباری کے بارے میں اس کے باوجود کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے کہ 'اے ایف پی ' نے تبصرے کی درخواست کی تھی۔

اقوام متحدہ کے مقامی ذمہ دار ٹور وینیس لینڈ نے منگل کے روز کہا تھا کہ اسرائیل کی طرف سے شالوم راہداری کا محدود حد تک کھولنا بھی ایک مثبت بات ہے۔ لیکن اہم بات یہ ہے کہ غزہ میں انسانی تباہی کو روکنے کے لیے ابھی بہت کم ہیں۔

کیونکہ غزہ کی کل 24 لاکھ کی آبادی میں سے 19 لاکھ فلسطینی بے گھر ہوکر نقل مکانی پر مجبور ہو چکے ہیں۔ جن کے لیے امدادی گروپوں کی کوششیں ناکافی ہیں۔

علاوہ ازیں غزہ میں پچھلے اڑھائی ماہ کے دوران اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں کم از کم بیس ہزار فلسطینی جاں بحق ہو چکے ہیں۔ جن میں 8000 فلسطینی بچے اور 6200 فلسطینی عورتیں شامل ہیں۔ لیکن اسرائیلی بمباری مسلسل جاری ہے، جمعرات کا دن غزہ میں بمباری کے حوالے سے ایک اور شدید ترین دن تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں