فلسطین اسرائیل تنازع

اسرائیل نے خان یونس کا ایک بڑا علاقہ خالی کر دیا، شمالی اور وسطی غزہ پر بمباری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

فلسطینی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق غزہ کی پٹی پر جاری جنگ کے 76 ویں روز آج جمعرات کو اسرائیلی طیاروں اور توپ خانے نے وسطی اور شمالی غزہ میں البریج پناہ گزین کیمپ اور جبالیہ کو نشانہ بنایا۔

ادھر غزہ کی پٹی کے جنوب میں واقع خان یونس میں فوجی آپریشن جاری ہے۔

اسرائیل نے اس شہر کے ایک بڑے علاقے کو خالی کرنے کا حکم دیا جو کہ جنوبی غزہ کی پٹی کا سب سے بڑا شہر ہے جہاں ڈھائی ماہ سے جاری جنگ سے بے گھر ہونے والے بہت سے فلسطینی پناہ لیے ہوئے ہیں۔ اقوام متحدہ کے رابطہ دفتر برائے انسانی امور (او سی ایچ اے) نے کہا ہے کہ اسرائیلی فوج نے خان یونس کے علاقے کے "تقریباً 20 فیصد" پر محیط علاقے کو فوری طور پر خالی کرنے کا حکم دیا۔

کل بدھ کو خان یونس کے ایک علاقے پر اسرائیلی بمباری 25 افراد شہید ہوگئے۔

مغربی کنارے میں نئی دراندازی

درایں اثناء فلسطینی خبر رساں ایجنسی کے مطابق مغربی کنارے میں اسرائیلی فوج نے کئی شہروں اور قصبوں پر دھاوا بول دیا۔

اسرائیلیی فوج نے اریحا میں عین السلطان کیمپ اور شمالی مغربی کنارے میں قلقیلیہ، جنوب میں الخلیل میں بیت امر، بنی نعیم ، الظاہریہ کے قصبے اور جنین کے مغرب میں یعبد میں دراندازی کی۔

غرب اردن کا منظر
غرب اردن کا منظر

ایک پیادہ فورس نے بھی یعبد پر دھاوا بول دیا جہاں خوفناک جھڑپیں ہوئیں۔ اسرائیلی فورسز نے براہ راست گولیاں چلائیں تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

اسرائیلی فورسز بیت لحم کے مشرق میں واقع قصبے طوق میں بھی داخل ہوئیں اور ایک نوجوان کو نعلین قصبے میں اس کے گھرپر چھاپہ مار کر گرفتار کر لیا۔

قابل ذکر ہے کہ 7 اکتوبر سے اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ شروع ہونے کے بعد غزہ کی پٹی میں 20 ہزار افراد شہید ہو چکے ہیں، جن میں 8000 بچے اور 6200 خواتین شامل ہیں۔

فلسطینی وزارت صحت کے مطابق زخمی فلسطینیوں کی تعداد 52,600 تک پہنچ گئی جب کہ 6,700 افراد تاحال لاپتہ ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں