اسرائیل شکست کھا چکا، جنگ روکنے سے قبل قیدیوں پر بات نہیں ہوگی: حمدان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسلامی تحریک مزاحمت [حماس] حماس کےسیاسی شعبے کے سینیر رکن اسامہ حمدان نے کہا ہے کہ قابض اسرائیلی فوج غزہ کی پٹی میں اپنے جارحانہ اہداف حاصل کرنے میں ناکام رہی ہے۔ جب تک غزہ کے خلاف مجرمانہ جارحیت بند نہیں ہوتی قابض کے قیدیوں کے حوالے سے کوئی بات چیت نہیں ہو گی۔

حمدان نے ہفتہ کی شام بیروت سے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ صیہونی دہشت گردی ہمارے عوام کے عزم، استقامت اور مزاحمت کو نہیں توڑ سکے گی اور نہ ہی اپنے کسی جارحانہ اہداف کو حاصل کرنے میں کامیاب ہو گی۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اسرائیلی جنگی جرائم اور مزاحمت کو ختم کرنے کی دھمکیاں فلسطینیوں کے حوصلے پست نہیں کرسکتیں۔ قابض فوج شکست فاش سے دوچار ہوچکی ہے۔ وہ صرف نہتے لوگوں کا قتل عام کر رہی ہے، بچوں خواتین اور بزرگوں کو بے دردی سے قتل کرکے وہ اپنی شکست پر پردہ ڈال رہی ہے۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ ہمارے لوگ اپنی سرزمین اور مقدسات کے دفاع میں ثابت قدم رہیں گے۔ حملہ آور ہماری سرزمین سے نکل جائیں گے کیونکہ ہم زمین کے باقی مالک ہیں اور انشاء اللہ جلد قبضہ ختم ہو جائے گا۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ ہمارے لوگ نہ تو ہار مانتے ہیں اور نہ ہی ہتھیار ڈالنا جانتے ہیں اور وہ اپنی آزادی اور فتح حاصل کرنے کے لیے پرعزم ہیں۔

اسامہ حمدان نے کہا کہ صیہونی غاصبانہ تسلط 78ویں روز بھی امریکی حمایت اور ہتھیاروں سے غزہ کی پٹی میں ہمارے فلسطینی عوام کے خلاف نسل کشی کی جنگ جاری رکھے ہوئے ہے اور دنیا اس جارحیت کو روکنےئ میں بری طرح ناکام ہو چکی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں