فلسطین اسرائیل تنازع

اقوام متحدہ کو کرسمس کے دنوں میں غزہ پر زیادہ بمباری اور زیادہ شہادتوں پر تشویش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اقوام متحدہ نے کرسمس کے آغاز کے ساتھ ہی غزہ میں اسرائیلی کی طرف سے بڑھا دی گئی بمباری اور فلسطینیوں کی 100 سے زائد شہادتوں پر افسوس ظاہرکیا ہے۔

اسرائیل نے کرسمس کے دنوں میں وسطی اور جنوبی غزہ کے علاقوں میں زیادہ بمباری کی ہے۔ اسرائیلی فوج نے اس علاقے میں پناہ لینے والے غزہ کے شہریوں کو ایک مرتبہ پھر یہاں سے نکل جانے کے لیے کہا ، مگر بہت بڑی تعداد نے یہی کہا کہ اب کہاں جائیں کوئی بھی جگہ محفوظ نہیں رہی ہے۔

تاہم اقوام متحدہ کے انسانی حقوق سے متعلق دفتر کے ترجمان سیف میگانگو نے اس موقع پر دیے گئے اپنے بیان میں کہا ' ہمیں غزہ کے وسط میں اسرائیلی افواج کی بمباری پر گہری تشویش ہے، جس کے نتیجے میں کرسمس کی شام سے ایک سو سے زائد فلسطینی شہید ہو گئے ہیں۔

ترجمان نے مطالبہ کیا ' اسرائیلی افواج کو چاہیے کہ عام شہریوں کو جاں بحق کرنے سے بچانے کے لیے تمام ضروری اقدامات کریں۔'

ترجمان نے مزید کہا ' اسرائیلی افواج کی طرف سے محض اعلانات کر دینا اور شہریوں کو علاقے سے نکال دینا بین الاقوامی قانون کے مطابق کافی نہیں ہے۔ '

واضح رہے غزہ میں 20 ہزار سے زائد فلسطینی شہید ہو چکے اور دنیا بھر سے آنے والی جنگ بندی کی آوازوں سمیت حماس کے جنگ بندی کے حق میں ہوجانے کے باوجود اسرائیل جنگ کو اپنے مقاصد کے حصول تک جاری رکھنا چاہتا ہے۔ جبکہ پورے خطے میں جنگ کے پھیل جانے کے خدشات بھی بڑھتے جا رہے ہیں۔

یکم دسمبر سے جنگی وقفوں کے ختم ہونے کے بعد سے اسرائیل نے بمباری شدید تر کر دی ہے۔ ہسپتالوں کا بھی اسرائیلی حملوں کا ہدف بننا اب معمول بن چکا ہے۔ خان یونس کے الناصر ہسپتال پر حالیہ دنوں میں دوبار بمباری کی گئی اور کم از کم 10 فلسطینی شہید ہو گئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں