فلسطین اسرائیل تنازع

شارجہ میں اہل غزہ کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے سال نو کے آغاز پر آتش بازی ممنوع قرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات کے ایک اہم شہر شارجہ نے غزہ کے رہائشی فلسطینیوں کے ساتھ ہمدردی اور یکجہتی کے اظہار کے لیے نئے سال کی آمد کے سلسلے میں جشن منانے اور آتش بازی کرنے پر پابندی لگادی ہے۔

اس سلسلے میں شارجہ پولیس کی طرف سے ایک باضابطہ بیان جاری کر کے شہریوں کو متنبہ کر دیا گیا ہے۔ پولیس کے جاری کردہ بیان میں آتش بازی اور جشن منانے جیسی سرگرمیوں پر پابندی عاید کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ' یہ غزہ کے رہنے والے بھائیوں کے ساتھ حقیقی یکجہتی کے اظہار اور انسانی بنیادوں پر تعاون کے لیے کیا گیا ہے۔'

شارجہ پولیس نے زور دیا ہے کہ 'ہر کوئی اس پابندی پر عمل کرے ، بصورت دیگر خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی کی جائے گی۔ یہ بھی واضح کر دیا گیا ہے کہ یہ پابندی انفرادی سطح پر بھی نافذ ہو گی اور اجتماعی سطح یعنی اداروں کی سطح پر بھی نافذ ہو گی۔'

بیان میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ انسانی بنیادوں پر غزہ کے لوگوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کرنا ہماری ثقافت اور نظریات کا بھی تقاضا ہے۔ کیونکہ شارجہ میں اپنی ثقافت اور نظریات کی پیروی کی جاتی ہے۔

متحدہ عرب امارات کا حصہ ہونے کے ناطے شارجہ سے غزہ والوں کے لیے یہ اعلان غیر معمولی ہے۔ واضح رہے اب تک غزہ میں 21000 فلسطینی شہید ہو چکے ہیں۔ جن میں بڑی تعداد فلسطینی عورتوں اور بچوں کی ہے۔

جبکہ 20 لاکھ کے قریب فلسطینی اسرائیلی بمباری اور حملوں کے نتیجے میں بے گھر ہو کر نقل مکانی پر مجبور ہو چکے ہیں۔ رواں سال فلسطین میں رہائشی مسیحیوں نے کرسمس بھی سوگ کے سائے میں اور سادگی سے منائی ہے۔ تاہم مسلمانوں کی کسی ریاست میں سال نو کے حوالے سے شارجہ کا یہ اعلان ابھی تک پہلا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں