مسئلہ فلسطین کو ختم کرنے اورفلسطینیوں کی جبری ھجرت قبول نہیں: السیسی، شاہ عبداللہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصری صدر عبدالفتاح السیسی اوراردن کے فرمانروا شاہ عبداللہ دوم نے غزہ میں جاری اسرائیلی جنگ کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ دونوں عرب ممالک فلسطینیوں کی جبری ھجرت اورقضیہ فلسطین کو سرد خانے میں ڈالنے کی اجازت نہیں دیں گے۔

مصری ایوان صدر کے بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ مصری صدر اوراردن کے فرمانروا نے آج بدھ کے روز ہونے والی ملاقات کے دوران تنازعات کے دائرے کو پھیلنے سے روکنے کی اہمیت پر زور دیا جس سے علاقائی اور بین الاقوامی سطح پر سلامتی اور استحکام کو غیر مستحکم کیا جائے۔

انہوں نے وضاحت کی کہ مصری صدر اور اردن کے بادشاہ نے عالمی برادری پر زور دیا کہ غزہ میں فوری جنگ بندی اور امداد کی ترسیل مسئلے کا واحد حل ہے جس پر عمل درآمد کی طرف زور دینا چاہیے۔

جنگ کو روکنے کی کوشش

اردن کے شاہی دربار نے آج کے بدھ کو بتایا کہ شاہ عبداللہ دوم مصرکے صدر عبدالفتاح السیسی سے ملاقات اور غزہ کی پٹی میں ہونے والی پیش رفت پر بات چیت کے لیے قاہرہ گئے تھے۔

اردنی شاہی دربارنے مزید کہا کہ السیسی اور شاہ عبداللہ کے درمیان ہونے والی ملاقات میں غزہ میں فائر بندی کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

کل منگل کو قاہرہ میں مصر کے وزیر خارجہ سامح شکری نے اپنے اردنی ہم منصب ایمن صفدی سے غزہ پرجنگ کو روکنے کی کوششوں کو تیز کرنے کے لیے جاری ہم آہنگی پر ملاقات کی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں