اسرائیل مغربی کنارے میں فلسطینیوں کی غیر قانونی ہلاکتیں بند کرے:اقوام متحدہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اقوام متحدہ نے مقبوضہ مغربی کنارے میں انسانی حقوق کی صورتحال کو مسلسل بد تر ہونے پر جمعرات کے روز اسرائیل پر زور دیا ہے کہ وہ فلسطینیوں کی غیر قانونی قتل و غارت کو روک دے۔ اقوام متحدہ کی طرف سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ 'اسرائیل مغربی کنارے میں فوجی ہتھیاروں اور دیگر ذرائع کا استعمال قانون نافذ کرنے سے متعلقہ آپریشن میں روک دے۔ نیز غیر قانونی نظر بندیوں، فلسطینیوں کے ساتھ ناروا سلوک اور فلسطینیوں کے خلاف امتیازی طور پر لگائی گئی نقل و حرکت پر پابندیوں کو ختم کرے۔'

اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے شعبے کے سربراہ والکر ترک نے اپنے بیان میں کہا ہے'مغربی کنارے میں قانون نافذ کرنے کے سلسلے میں کاروائیوں کے دوران فوجی ہتھیاروں اور طریقوں کا استعمال، غیرضروری طور پر فوجی طاقت کا استعمال اور فلسطینیوں کی نقل و حرکت پر امتیازی بنیادوں پر لگائی گئی پابندیاں جن سے فلسطینی متاثر ہوتے ہیں انتہائی تکلیف دہ اسرائیلی اقدامات ہیں۔' والکر ترک نے مزید کہا 'جس قدر تشدد اسرائیلی فوج کر رہی ہے اس کی شدت اور اس قدر ظلم برس ہا برس میں نہیں دیکھا گیا۔'

اقوام متحدہ کی جاری کردہ رپورٹ 7 اکتوبر کے بعد اسرائیلی فوج کی طرف مغربی کنارے اور مشرقی یروشلم میں رواں رکھے گئے مظالم کے بارے میں ہے۔

اسرائیل نے سات اکتوبر سے غزہ میں مسلسل اور بدترین بمباری کے ساتھ ساتھ فوجی حملے شروع کر رکھے ہیں جن کے نتیجے میں اب تک اکیس ہزار سے زائد فلسطینی بشمول بچے اور عورتیں ہلاک ہوچکے ہیں۔ جبکہ مغربی کنارے میں بھی یہ تعداد تین سو سے زائد ہوچکی ہے۔

رپورٹ جس میں 7 اکتوبر سے 20 نومبر کی ہلاکتوں کا تذکرہ ہے میں کہا گیا ہے 'اس دوران غزہ پر بمباری میں تیزی سے اضافہ ہوا اسی طرح انتہائی گنجان آباد علاقوں میں موجود پناہ گزینوں کے کیمپ بھی حملوں کی زد میں رہے۔ ان حملوں کے نتیجے میں غیر معمولی طور پر جانی نقصان ہوا۔'

رپورٹ کے مطابق سات اکتوبر کے بعد مغربی کنارے میں یہودی آبادکاروں کی طرف سے فلسطینیوں پر بھی غیر معمولی تیزی دیکھی ہے۔ اس پس منظر میں والکر ترک نے اسرائیل پر زور دے کر مطالبہ کیا ہے وہ مغربی کنارے میں پرتشدد کاروائیوں کو روکے جو فلسطینیوں کے خلاف جاری ہیں۔ انہوں نے مزید کہا ہے کہ انہوں 7 اکتوبر سے 27 دسمبر تک مغربی کنارے میں فلسطینیوں کی تین سو ہلاکتوں کو ریکارڈ کیا۔ انہوں نے یہ بھی مطالبہ کیا ہے کہ اسرائیل اگر ان کے دفتر کو اسرائیل کے اندر تک رسائی کی اجازت دے گا تو اقوام متحدہ سات اکتوبر سے اسرائیل میں مرنے والے اسرائیلیوں کے بارے میں بھی اپنی رپورٹ پیش کرے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں