فلسطین اسرائیل تنازع

جنگ، نقل مکانی اور بقا کی جنگ کے دوران 4 بچوں کی پیدائش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

جنوبی غزہ میں جنگ، نقل مکانی اور بقا کی جنگ کے دوران چار بچوں کی پیدائش ہوئی ہے۔ چار بچوں کو جنم دینے والے ماں ایمان المصری کا تعلق فلسطین کے شمال سے ہے۔

7 اکتوبر کو شروع ہونے اسرائیل حماس جنگ کے وقت وہ اپنے گھر سے میلوں دور جبالیہ پناہ گزین کیمپ تک پہنچی تھی۔ ایمان المصری کے ساتھ اس کے تین بچے بھی تھے۔ وہ حفاظت کے لیے جنوب کی طرف دیر البلاح تک جانا چاہتے تھے۔

ایمان المصری کے ہاں 18 دسمبر کو دو بیٹیوں ٹیا اور لن اور دو بیٹوں یاسر اور محمد کی پیدائش جنوبی غزہ کے ایک ہسپتال میں ہوئی۔ ہسپتال میں اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں زخمی ہونے والے فلسطینیوں کے لیے جگہ کم ہونے کی وجہ سے ایمان المصری کو ہسپتال سے فوری طور پر جانے کے لیے کہا گیا۔

ایمان المصری، ایک بے گھر فلسطینی جو بیت حانون میں اپنے گھر سے اسرائیلی بمباری سے بچنے کے لیے اپنے گھر سے بھاگی تھی، اپنے چار بچوں میں سے ایک کو کھانا کھلاتی ہے - چوتھا اب بھی اسپتال میں زیر علاج ہے

ایمان کے بیٹے محمد کی حالت اچھی نہیں تھی۔ وہ اسے نصیرات پناہ گزین کیمپ کے ہسپتال میں ہی علاج کے لیے چھوڑ آئی ہے۔ ایمان نے بتایا کہ محمد کا وزن صرف 2 اعشاریہ 2 پاؤنڈ ہے۔

ایمان المصری اس وقت اپنے خاندان کے دیگر 50 لوگوں کے ساتھ دیر البلاح کے ایک سکول میں پناہ لیے ہوئے ہے۔ ایمان المصری نے بتایا کہ جنگ شروع ہوئی تو وہ اپنے بچوں کے ساتھ گھر سے کسی حفاظتی مقام کی تلاش میں نکلی۔ اس کے پاس بچوں کے صرف گرمیوں کے کپڑے تھے۔ میرا خیال تھا کہ جنگ ایک یا دو ہفتے رہے گے، سب کچھ ٹھیک ہوجائے گا اور ہم اپنے گھر واپس چلے جائیں گے۔ لیکن اب سب کچھ کھنڈر میں بدل چکا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں