اسرائیل سے تعاون کرنے پر ایران مں چار افراد کو پھانسی دے دی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی عدالت کے فیصلے کے بعد جمعہ کے روز چار افراد کو پھانسی دے دی گئی ہے۔ ان چار افراد کو عدالت نے دشمن ملک اسرائیل کے جاسوسی کرنے اور اسرائیل کی مدد کرنے پر سزائے موت سنائی گئی تھی۔

عدلیہ کی طرف سے بتایا گیا ہے رواں ماہ کے دوران دو ہفتے قبل بھی اسی جرم میں ایک فرد کو پھانسی دی گئی تھی۔ عدالتی ویب سائیٹ 'میزان آن لائن' کی رپورٹ کے مطابق ایران کے شمال مغربی صوبے آذر بائیجان میں صیہونی حکومت اسرائیل سے جڑے ہوئے چار لوگوں کو پھانسی دی گئی ہے۔

ان میں تین مردوں وفا حنریج ، ارم عمری، اور رحمان کے علاوہ نسیم نمازی نامی ایک عورت بھی بھی شامل تھی۔ یہ چاروں اسرائیلی حکومت کے ساتھ تعاون کے مرتکب پائے گئے تھے۔

ان سب کو ایران کے مغربی صوبے مغربی آذر بائیجان میں صبح سویرے پھانسی دے دی گئی ہے۔ ان سب کو خدا سے لڑائی کے مرتکب قرار دیتے ہوئے سزائے موت سنائی گئی تھی۔

عدلیہ کی طرف سے بیان میں کہا گیا ہے کہ ان چار نے اسرائیلی خفیہ ادارے موساد کے ساتھ مل کر ملکی سلامتی کے خلاف کارروائیوں میں حصہ لیا۔

میزان آن لائن کی رپورٹ کے مطابق 16 دسمبر کو ایران کے جنوب مشرقی صوبے سیسیتان میں بھی ایک شخص کو پھانسی دی گئی تھی۔ اسے بھی اسرائیلی کی مدد کرنے اور ملکی سلامتی کے خلاف سرگرمیوں میں ملوث ہونے کی بنا پر سزائے موت سنائی گئی تھی۔

اس سے قبل دسمبر 2022 میں بھی ایران میں چار مجرموں کو اسی جرم میں پھانسی دی گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں