اسرائیل کی جنوبی شام میں ایک فضائی دفاعی اڈے پر بمباری: انٹیلی جنس ذرائع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شامی فوج اور انٹیلی جنس ذرائع نے بتایا ہے کہ اسرائیل نے جمعرات کی شام جنوبی شام میں ایک بڑے فضائی دفاعی اڈے کو نشانہ بناتے ہوئے ایک فضائی حملہ کیا۔ غزہ میں 7 اکتوبر کو جنگ شروع ہونے کے بعد سے اپنی نوعیت کی تازہ ترین بمباری ہے۔

شام کے سرکاری میڈیا نے اس سے قبل شامی فوجی ذرائع کے حوالے سے کہا تھا کہ اسرائیل نے مقبوضہ شامی گولان کی سمت سے ایک فضائی حملہ کیا، جس میں جنوبی علاقے کے کچھ مقامات کو نشانہ بنایا گیا۔

ذرائع نے مزید کہا کہ "ہماری فضائی دفاعی افواج نے اسرائیلی دشمن کے میزائلوں کا جواب دیا اور ان میں سے بیشتر کو مار گرایا۔ اس حملے میں معمولی مالی نقصان ہوا ہے تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا‘‘۔

سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس نے کہا ہے کہ اسرائیلی میزائلوں نے دمشق کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے علاقے کو نشانہ بنایا اور سویداء گورنری کے جنوبی دیہی علاقوں میں فضائی دفاعی بٹالین کے ایک مرکز کو بھی نشانہ بنایا۔

آبزرویٹری نے بتایا کہ دمشق کے ہوائی اڈے کے علاقے کو نشانہ بنایا گیا تھا۔ اس سے قبل ہوائی اڈے کو اسرائیلی بمباری سے تباہ کردیا تھا اور رن وے کی بحالی پر 65 دن لگے۔ اس کےبعد پہلے طیارے کی پرواز کے بعد دوبارہ ہوائی اڈے کو نشانہ بنایا گیا۔

اسرائیلی فوج کی جانب سے فوری طور پراس کارروائی پر کوئی تبصرہ نہیں کیا گیا۔

حماس کی طرف سے 7 اکتوبر کو جنوبی اسرائیل پر کیے گئے حملے کے بعد اسرائیل نے شام میں ایرانی حمایت یافتہ گروہوں کے ساتھ ساتھ شامی فوج فضائی دفاع کے اہداف پر اپنے حملوں میں اضافہ کر دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں