اسرائیلی فورسز کی کار ٹکر سے فلسطینی جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطینی وزارتِ صحت نے کہا کہ اسرائیلی افواج نے ہفتے کے روز مقبوضہ مغربی کنارے میں ایک فلسطینی کو گولی مار کر شہید کر دیا جب فوج نے اطلاع دی کہ اس نے مبینہ طور پر گاڑی ٹکرا دی۔

اسرائیلی فوج نے کہا کہ فوجیوں نے ہیبرون کے جنوب میں واقع فوار پناہ گزین کیمپ کے قریب ایک فوجی چوکی سے گاڑی ٹکرانے والے ڈرائیور کو "بے اثر" کردیا۔

اے ایف پی کے ایک صحافی نے دیکھا کہ اسرائیلی افواج نے ایک گاڑی کو گھیرے میں لے لیا جبکہ علاقے میں فوجی اور فوجی گاڑیاں تعینات تھیں۔

فلسطینی وزارتِ صحت نے کہا کہ محمد مسالمہ کو اسرائیلی فوجیوں نے کیمپ کے داخلی دروازے پر گولی مار کر شہید کر دیا۔

اسرائیلی پبلک براڈکاسٹر کان نے ایک شخص کے معمولی زخمی ہونے کی اطلاع دی ہے۔

یہ واقعہ ایک دن بعد سامنے آیا ہے جب اسرائیلی فوجیوں نے ایک اور فلسطینی کو گولی مار کر شہید کر دیا تھا جس کے بارے میں فوج نے کہا تھا کہ اس نے ہیبرون کے قریب ایک گاڑی لوگوں پر چڑھا دی تھی جس سے طبی ماہرین کے مطابق چار افراد زخمی ہو گئے تھے۔

1967 کی عرب اسرائیل جنگ کے بعد سے اسرائیل کے زیرِ قبضہ مغربی کنارے میں تشدد شدت اختیار کر گیا ہے جب سے تقریباً تین ماہ قبل اسرائیل اور غزہ کے حکمران حماس کے درمیان لڑائی شروع ہوئی ہے۔

وزارتِ صحت کے اعداد و شمار کے مطابق اس سال مغربی کنارے میں اسرائیلی سکیورٹی فورسز اور آباد کاروں کے ہاتھوں 520 سے زیادہ فلسطینی جاں بحق ہو چکے ہیں جن میں سے کم از کم 317 افراد حماس کے 7 اکتوبر کو اسرائیل پر حملے کے بعد سے جاں بحق ہوئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں