سعودی عرب کی خواتین کا صنعتوں میں بھی کردار بڑھنے لگا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کے نائب وزیر برائے صنعت و معدنی وسائل فارس بن صالح الصقعبی نے کہا ہے وزارت انسانی وسائل کی ترقی کے ایک ایسے منصوبے کو آگے بڑھا رہی ہے۔ جس کا مقصد صنعتی میدان اور خصوصاً کان کنی کے شعبے میں افرادی قوت کی مہارت اور اہلیت کو بڑھانا ہے۔

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق سعودی نائب وزیر نے کہا ' اس منصوبے کے تحت قومی پروگرام بھی اہداف کے حصول کےلیے مدد گار ہیں۔ جن کے بارے میں جلد چیزیں سامنے لائی جا سکیں گی۔

نائب وزیر فارس بن صالح نے اس امر کا اظہار الخراج میں فوڈ انڈسٹریز پولی ٹیکنیک کے دورے کے موقع پر کیا ہے۔ ان کا کہنا تھا اس سلسلے میں وزارت نے سعودی یونیورسٹیوں کے ساتھ بھی بات چیت شروع کر رکھی ہے اور دیگر تعلیمی اداروں اور ماہرین کے ساتھ بھی تاکہ افرادی قوت کی اہلیت اور صلاحیت کو بڑھایا جاسکے۔

نائب وزیر فارس بن صالح الصقعبی نے کہا ' ان کوششوں میں مائیننگ انجینئیرنگ ڈیپارٹمنٹ کی تشکیل بھی شامل ہے اور اس سلسلے میں شاہ فہد یونیورسٹی آف پٹرولیم ایند منرلز بھی کردار ادا کر رہی ہے۔

علاوہ ازیں شہزادی نورہ بنت عبدالرحمان یونیورسٹی اور شاہ عبدالعزیز یونیورسٹی کا بھی اشتراک بھی شامل ہے۔ جبکہ شاہ سعود یونیورسٹی اس اہم صنعتی شعبے میں خواتین کے کردار کو بڑھانے کے لیے کردار ادا کر رہی ہے۔ '

نائب وزیر صنعت الصقعبی نے کہا ' ہم صنعتی اور جدت کے شعبے میں 21 لاکھ ملازمتوں کے ہدف کی طرف بڑھنے کی کمٹمنٹ کو پورا کریں گے۔ اس مقصد کے لیے وزارت کارکنوں کی تعلیم و تربیت کے مختلف منصوبوں پر کام کر رہی ہے۔ اس سلسلے میں حوصلہ افزائی کے لیے وظائف کا بھی اجراء کیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں