اسرائیل کا شام سے آنے والے ہدف کو فضا میں تباہ کرنے کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسرائیلی فوج نے اعلان کیا ہے کہ اس کے لڑاکا طیاروں نے شام سے اسرائیل کی طرف آنے والے ایک ہدف کو فضا میں بروقت کارروائی کے ذریعے تباہ کر دیا۔

"شام سے ہوائی جہاز کی دراندازی"

ایک مختصر فوجی بیان میں اسرائیل کا کہنا تھا کہ یہ واقعہ "شمالی اسرائیل میں دشمن کے طیاروں کی دراندازی" سے خبردار کرنے کی خاطر بج اٹھنے والے سائرن الرٹ کے بعد پیش آیا۔

خود کو "عراق میں اسلامی مزاحمت" کہلانے والے مسلح دھڑوں نے اعلان کیا کہ انہوں نے "مقبوضہ گولان میں ایک فوجی ہدف پر مناسب ہتھیاروں سے حملہ کیا ہے"۔

"لبنان سے پروجیکٹائل کا پتا چلا"

اسی دوران اسرائیلی فوج نے اتوار کو کہا کہ اس نے لبنان سے اسرائیل کی طرف دو پروجیکٹائل داغے جانے کی نشاندہی کی ہے۔ اس کے توپ خانے نے فائرنگ کے ذرائع کو نشانہ بنایا ہے۔

یہ اس وقت سامنے آیا ہے جب لبنان کی قومی خبر رساں ایجنسی نے اطلاع دی ہے کہ ملک کے جنوب میں الجیب اور حرف کے مضافات میں وقفے وقفے سے اسرائیلی بمباری کے ساتھ ہی ناقورہ میں اقوام متحدہ کی عبوری فورس (یونیفل) کے جنرل ہیڈ کوارٹر میں سائرن بج رہے تھے۔

ایجنسی نے کہا ایک اسرائیلی گولہ بنت جبیل شہر اور دوسرا عقبہ مارون کے علاقے میں گرا تاہم کسی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں