عراق کے عین الاسد امریکی فوجی مرکز پر مسلح ڈرون کو روک دیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

عراقی فوج کے ذرائع نے پیر کو رائٹرز کو بتایا کہ دفاعی نظام نے عین الاسد فوجی مرکز پر ایک مسلح ڈرون کو مار گرایا جو مغربی عراق میں امریکی اور دیگر بین الاقوامی افواج کی میزبانی کرتا ہے۔

پیر کی صبح ہونے والا حملہ جس میں ذرائع کے مطابق کوئی ہلاکت یا نقصان نہیں ہوا، شمالی عراق کے اربیل ہوائی اڈے پر اتوار کو ڈرون مار گرانے کے چند گھنٹوں میں دوسرا حملہ ہے جہاں امریکی اور دیگر بین الاقوامی افواج تعینات ہیں۔

17 اکتوبر سے عراق اور شام میں امریکی افواج پر 102 سے زیادہ حملے ہو چکے ہیں۔

گذشتہ ہفتے اربیل ہوائی اڈے کے قریب ایک بوبی ٹریپ (پوشیدہ) ڈرون کو مار گرایا گیا تھا جس کی وجہ سے ہوائی اڈے کے روزمرہ امور معطل ہو گئے۔

عراقی فوج کے ترجمان یحییٰ رسول نے کہا کہ اس واقعے میں کچھ افراد زخمی ہوئے ہیں اور شہری پروازوں کے اوقات میں خلل پیدا ہوا ہے۔

جب ایران سے منسلک مزاحمت کاروں کے ڈرون حملے میں ایک امریکی فوجی کی حالت زخموں کی وجہ سے تشویشناک ہو گئی اور دو دیگر امریکی اہلکار زخمی ہوئے تو امریکی فوج نے عراق میں جوابی فضائی حملے کیے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں