حماس کے خلاف جنگ طویل، جب تک ضرورت ہوئی اسرائیلی فوج غزہ میں رہے گی:گیلنٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسرائیلی وزیر دفاع یوآو گیلنٹ نے منگل کے روز اعلان کیا کہ اسرائیلی فوج "ضرورت پڑنے پر کچھ عرصے تک غزہ میں موجود رہے گی"۔

گیلنٹ نے کہا کہ جنگ اس وقت ختم ہو جائے گی جب حماس غزہ پر حکومت نہیں کرے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ "خان یونس میں جنگ شمالی غزہ سے مختلف ہے اور اس کے لیے آپریشنل مراحل کی ضرورت ہے"۔

تازہ ترین فیلڈ پیش رفت کے مطابق غزہ کی پٹی میں حماس کی وزارت صحت نے منگل کے روز کہا کہ 7 اکتوبر سے اسرائیلی بمباری میں مارے جانے والے فلسطینیوں کی تعداد 22,185 ہو گئی ہے، جب کہ تقریباً 57,000 زخمی ہیں۔

وزارت صحت نے ٹیلی گرام پر ایک مختصر بیان میں مزید کہا کہ گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران غزہ کی پٹی پراسرائیلی بمباری کے نتیجے میں 207 افراد ہلاک اور 338 دیگر زخمی ہوئے۔

عبرانی اخبار ’ہارٹز‘ نے اسرائیلی فوج کے حوالے سے بتایا ہے کہ گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران فلسطینی علاقوں میں کارروائیوں میں 31 فوجی زخمی ہوئے جن میں سے 5 کی حالت تشویشناک ہے۔

اسرائیلی نشریاتی ادارے نے منگل کو کہا کہ فوج نے غزہ کی پٹی کے رہائشیوں میں انسانی امداد کی تقسیم کا ایک منصوبہ تیار کیا ہے۔ غزہ کی پٹی میں "حمائل" کے نام سے مشہور خاندان کو امداد کی تقسیم کی ذمہ داری سونپی جائے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں