فلسطین اسرائیل تنازع

حماس رہ نما العاروری کے قاتل سزا نہیں بچ سکیں گے: حزب اللہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لبنانی حزب اللہ نے بیروت کے قریب حماس کے سیاسی شعبے کےنائب صدر صالح العاروری کی قاتلانہ حملے میں ہلاکت کی شدید الفاظ مذمت کی ہے۔

حزب اللہ نے ایک بیان میں اس وقعے پراپنے رد عمل میں کہا ہےکہ صالح العاروری کا قتل ایک مجرمانہ واقعہ ہے جس پر خاموش رہنے کا کوئی جواز نہیں۔ اس جرم کے مرتکب لوگ سزا نہیں بچ سکیں گے۔ حزب اللہ نے اس واقعے کو لبنان پر ایک خطرناک حملہ قرار دیا۔

حزب اللہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ "ہم بیروت کے جنوبی مضافاتی علاقے کے قلب میں الشیخ صالح العاروری اور ان کے ساتھی شہداء کے قتل کے جرم کو لبنان، اس کے عوام، اس کی سلامتی، خودمختاری اور اس کی مزاحمت پر ایک خطرناک حملہ سمجھتے ہیں۔

حزب اللہ کا یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب آج بدھ کو سیکرٹری جنرل حسن نصر اللہ ایک اہم خطاب کرنے والے ہیں۔

گذشتہ پیر کو ایرانی پاسداران انقلاب کی قدس فورس کے ایک اہم رہنما رضی موسوی شام میں دمشق کے قریب سیدہ زینب کے علاقے میں اسرائیلی حملے میں مارے گئے تھے۔ تہران نے اس کارروائی کا الزام اسرائیل پر لگایا تھا۔

لبنانی حزب اللہ گروپ نے منگل کی شام ایک بیان میں کہا کہ اس نے مارج کے علاقے کے قریب اسرائیلی فوجیوں کے ایک گروپ کو میزائلوں سے نشانہ بنایا۔

العاروری کو منگل کے روز ایک اسرائیلی حملے میں مارا گیا۔ انہیں بیروت میں حماس کے دفتر پر ڈرون سے حملے میں نشانہ بنایا گیا۔ اس حملے میں ان کے ساتھ القسام بریگیڈز کے دو سینیر کمانڈروں سمیت متعدد افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں