صالح العاروری کی ہلاکت پر رام اللہ سمیت مغربی کنارے میں مکمل ہڑتال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطیینیوں نے حماس کے نائب سربراہ صالح العاروری کے بیروت میں منگل کی رات ہلاکت کے واقعے کے خلاف پورے مغربی کنارے میں مکمل ہڑتال کی ہے۔ اس موقع پر رام اللہ کی گلیوں میں اکثر جگہوں پر سناٹا رہا۔ اس موقع پر بالعموم ٹریفک اور مکمل طور پر دکانیں بند رہیں۔

سات اکتوبر غزہ میں جاری اسرائیلی جنگ کے دنوں میں مغربی کنارے کا یہ اس حوالے سے اہم ترین دن رہا کہ مغربی کنارا پوری طرح حماس اور اس کی قیادت کے ساتھ یکجہتی کرتا نظر آیا۔

اس سے پہلے بھی غزہ کے فلسطینیوں کے حق میں مغربی کنارے میں عوامی لہر موجود رہی ہے ، لیکن بدھ کے روز اس کا اظہار زیادہ بھر پور انداز میں سامنے آیا ہے۔

دریں اثناء فلسطینی اتھارٹی نے رام اللہ میں وزیر اعظم محمد اشتیہ نے ایک اجلاس سے خطاب کے دوران حماس کے نائب سربراہ صالح العاروری کی ہلاکت کے بہیمانہ واقعے اورغزہ میں اسرائیل کی طرف سے قحط ک پیدا کرنے پر اسرائیل کی مذمت کی ہے۔

واضح رہے اسرائیل کی طرف سے غزہ میں مسلسل اور بلا امتیاز بمباری کی وجہ سے اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ پانچ لاکھ سے زیادہ فلسطینی غزہ میں بھوک زدہ ہیں۔ گویا غزہ میں ہر چوتھا آدمی کھانے پینے کی اشیاء سے محروم ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں