مشرق وسطیٰ

نصراللہ کے خطاب کے چند گھنٹے بعد حزب اللہ کے رہ نما ساتھیوں سمیت فضائی حملے میں ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

العربیہ کے ذرائع نے بدھ اور جمعرات کی رات تک اطلاع دی ہے کہ لبنان کے علاقے ناقورہ میں حزب اللہ کے ایک اہم عہدیدار حسین یزبک اور ان کے تین ساتھی فضائی حملے میں مارے گئے ہیں۔

حزب اللہ نے بدھ کو ایک بیان میں جنوبی لبنان میں رہ نما حسین یزبک سمیت اپنے چار ارکان کے قتل کا اعلان کیا۔

انہوں نے بتایا کہ دیگر تین مرنے والوں میں ابراہیم عفیف، ہادی علی رضا اور حسین علی محمد غزالہ شامل ہیں۔

یہ واقعہ لبنانی حزب اللہ کے سکریٹری جنرل حسن نصراللہ کی تقریر کے چند گھنٹے بعد سامنے آیا ہے، جس میں انہوں نے کہا تھا کہ "اگر اسرائیل لبنان کے خلاف جنگ چھیڑنے کا سوچتا ہے، تو ہماری لڑائی سرحدوں اور ضوابط سے ماورا ہو گی "۔

انہوں نے کہا کہ حماس کے پولٹ بیورو کے نائب سربراہ صالح العاروری کا قتل ایک بڑا اور خطرناک جرم ہے جسے برداشت نہیں کیا جا سکتا۔ دشمن اس کی سزا سے نہیں بچ سکے گا۔

دو سکیورٹی ذرائع نے خبر رساں ادارے رائیٹرز کو بتایا کہ لبنانی حزب اللہ گروپ کا ایک مقامی اہلکار اور ایران کے اتحادی گروپ کے تین دیگر ارکان بدھ کو دیر گئے جنوبی لبنان پر اسرائیلی حملے میں مارے گئے۔

اس کے بعد بدھ کے روز جنوبی لبنان پر اسرائیلی فضائی حملوں میں ہلاکتوں کی تعداد نو ہوگئی ہے اور یہ سب حزب اللہ کے ارکان بتائے جاتے ہیں۔

سات اکتوبر کو غزہ کی پٹی میں اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ شروع ہونے کے بعد سے، لبنان اور اسرائیل کی سرحد پر حزب اللہ اور اسرائیلی فوج کے درمیان روزانہ بمباری کا تبادلہ ہوتا رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں