سلامتی کونسل کی طرف سے ایران میں کیے گئے دو دھماکوں کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے ایرانی شہر کرمان میں کیے گئے دو دھماکوں کی مذمت کی ہے۔ جمعرات کے روز سلامتی کونسل نے ایک بیان میں کہا' ایران میں دوہرا بم دھماکہ قابل مذمت ہے۔' جس کی ذمہ داری داعش نے قبول کی ہے۔

ان دھماکوں میں کم از کم 100 سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ دونوں دھماکے ایرانی پاسدران انقلاب کور کے کمانڈر اور مقتول جنرل سلیمانی کی چوتھی برسی کے سلسلے تقریب سے پہلے کیے گئے۔

ایرانی جنرل قاسم سلیمانی کو چار سال قبل امریکہ نے ڈرون حملہ کر کے بغداد میں قتل کر دیا تھا۔ جبکہ بدھ کو ان کی قبر کے نزدیک دھماکے کرنے کی ذمہ داری داعش کے قبول کرنے کا کہا گیا ہے۔

ایران کے جنوبی شہر کرمان میں مقتول جنرل کی قبر کےقریب کیے گئے ان دھماکوں میں سینکڑوں افراد کے زخمی ہونے کی بھی اطلاع دی گئی ہے۔

سلامتی کونسل کے ممبران نے اپنے بیان میں ان دو دھماکوں کی سخت الفاظ مذمت کی ہے اور ان دھماکوں کو بزدلانہ دہشت گردانہ کارروائی قرار دیا ہے۔

دوسری جانب داعش نے دعویٰ کیا ہے کہ یہ دھماکے اس نے کیے ہیں۔ ان دھماکوں میں ابتدائی طور پر تقریباً ایک سو افراد کی ہلاکت کی اطلاع سامنے آئی جبکہ اب یہ ایک سو سے زائد ہو گئی ہے۔

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے اپنے بیان میں دہشت گردی کی تمام شکلوں کی مذمت کا اعادہ کیا ہے اور حکومت ایران کے علاوہ متاثرہ خاندانوں کے ساتھ گہرے رنج و ہمدردی کا اظہار کیا ہے۔

بیان میں سلامتی کونسل کے ارکان نے اس بات پر بھی زور دیا ہے کہ دہشت گردی کے مجرموں ، منتظمین ، مالی مدد کرنے والوں اور ہر طرح کی مدد کرنے والوں کے خلاف ایران کی مدد کی جائے تاکہ دھماکوں کے ذمہ داروں کو جواب دہ ٹھہرایا جا سکے۔

سلامتی کونسل نے اپنے بیان میں یہ بھی کہا ہے کہ ، دہشت گردی اور مجرمانہ کارروائیوں کا کوئی بھی اقدام بلا جواز ہے ، خواہ اس کے پیچھے کچھ بھی نیت ہو اور کوئی بھی کرے۔'

واضح رہے ایران کو پہلے بھی انتہا پسندوں اور عسکریت پسندوں کے حملوں کا سامنا رہا ہے۔ جس میں اس کے حکام اور جوہری سائنسدان تک نشانہ بنائے گئے ہیں، ایران ان حملوں کے لیے اپنے دشمن اسرائیل کو ذمہ دار قرار دیتا ہے۔

علاقائی سطح پر کشیدگی میں اسرائیل حماس جنگ کے باعث مزید بڑھ گئی ہے۔ ایرانی پاسداران انقلاب کور کے ایک اہم کمانڈر بریگیڈئیر جنرل سید رضی موسوی کو بھی اسرائیل نے اسی ہفتے شام میں نشانہ بنایا ہے۔ جبکہ لبنان میں حماس رہنما صالح العاروری کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں