اردن اور فرانس کا غزہ میں مشترکہ ایئر ڈراپ آپریشن، کئی ٹن امدادی سامان گرایا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اردن اور فرانسیس ایئر ڈراپ آپریشن میں شاہی اردنی فضائیہ اور فرانسیسی فضائیہ سے تعلق رکھنے والے C130 طیاروں نے غزہ کی پٹی کے جنوب میں خان یونس میں نجی اردنی فیلڈ ہسپتال کے آس پاس کے علاقے میں دو ایئر ڈراپ کیے تھے۔

اردن کے اس آپریشن میں پہلی بار کوئی بیرونی ملک حصہ لے رہا ہے۔ اردن کے بعد فرانسیسی صدر کے حکم پر غزہ میں طیارے کی مدد سے امدادی سامان گرایا گیا۔

یہ آپریشن اردن اور فرانس کی مشترکہ فوجی ٹیموں نے بھی کیا۔ یہ فلسطین کے مسئلے پر اردن کے موقف کے لیے فرانس کی حمایت کے فریم ورک کے اندر آتا ہے۔

اردن کی مسلح افواج نے گذشتہ سال نومبر میں شاہی دیوان کی ہدایت کے تحت خان یونس کے نجی ہسپتال میں طیارے کی مدد سے سامان گرایا تھا۔

نویں لینڈنگ آپریشن کے مواد میں کئی ٹن طبی، امدادی اور علاج کا سامان شامل تھا، جی پی ایس گائیڈڈ پیراشوٹ سے لیس ڈبوں کے ذریعے لینڈنگ پلان کے مخصوص وقت کے مطابق ہدف والے مقامات پر یہ سامان چھ بج کر ایک منٹ پرگرایا گیا۔

اس کے علاوہ ولی عہد شہزادہ حسین بن عبداللہ نے اردن کے فیلڈ ہسپتال کی تیاری کی نگرانی کی جبکہ شہزادی سلمیٰ نے بھی شمالی غزہ کی پٹی کے لیے پچھلے ایئر ڈراپ میں حصہ لیا۔

غزہ پر جنگ کے آغاز سے لے کر اب تک اردن نے 133 امدادی اور طبی امداد کے ٹرک بھیجنے کے علاوہ تقریباً 25 امدادی طیارے بھیجے ہیں اور 9 ایئر ڈراپس بھیجے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں