فلسطین اسرائیل تنازع

شہریوں کے تحفظ کے لیے فوجی مہم میں نرمی کی جائے: جرمن وزیرِ خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

جرمن وزیرِ خارجہ اینالینا بیربوک نے اتوار کے روز اسرائیل پر زور دیا کہ وہ غزہ میں اپنی فوجی مہم کو کم کرے اور محصور فلسطینی علاقے میں شہریوں کے تحفظ کے لیے مزید اقدامات کرے۔

حماس کے ساتھ تنازع کے آغاز کے بعد سے جرمنی اسرائیل کا ایک ثابت قدم ترین حمایتی رہا ہے لیکن بیرباک نے خبردار کیا کہ اسرائیل کی سلامتی کا انحصار شہریوں کی ہلاکتوں کو محدود کرنے پر بھی ہے۔

انہوں نے کہا، "یہ تیزی سے واضح ہو رہا ہے کہ اسرائیلی فوج کو غزہ میں شہریوں کے تحفظ کے لیے مزید کچھ کرنا چاہیے۔ اسے فلسطینیوں کی بڑی تعداد کو نقصان پہنچائے بغیر حماس سے لڑنے کے طریقے تلاش کرنے چاہئیں۔"

بیرباک نے یروشلم کے دورے کے موقع پر کہا جب اسرائیل-حماس جنگ چوتھے مہینے میں داخل ہو رہی ہے۔ "بہت سے معصوم لوگوں کی تکلیف اس طرح جاری نہیں رہ سکتی۔ ہمیں کم شدت والی فوجی کارروائیوں کی ضرورت ہے۔"

7 اکتوبر کو اسرائیل پر حماس کے حملے کے بعد جب سے جنگ شروع ہوئی ہے، یہ جرمن وزیرِ خارجہ کا خطے کا چوتھا دورہ ہے اور اس دوران بھی انہوں نے جرمنی کی اسرائیل کے لیے بھرپور حمایت کا اعادہ کیا۔

بیرباک نے کہا، "آپ کا ملک اندھی دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہماری یکجہتی پر اعتماد کر سکتا ہے جو اسرائیل کو نقشے سے مٹانا چاہتی ہے۔"

انہوں نے مزید کہا، "اگر حماس جنونی طریقے سے اس احمقانہ جدوجہد کو آگے نہ بڑھاتی تو جنگ طویل عرصے سے ختم ہوچکی ہوتی۔"

لیکن بیرباک نے یہ بھی کہا کہ اسرائیل کو واضح طور پر اس بات پر غور کرنا ہوگا کہ وہ جنگ کیسے لڑے گا اور تنازعہ کے بعد غزہ کو کیسے سنبھالے گا۔ انتہائی دائیں بازو کے اسرائیلی سیاست دانوں کی طرف سے غزہ میں آباد کاروں کی واپسی کے مطالبت کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ فلسطینیوں کو علاقے سے "بے دخل" نہیں ہونا چاہیے۔

اسرائیل کے سرکاری اعداو و شمار پر مبنی اے ایف پی کی تعداد کے مطابق اسرائیل پر حماس کے حملے میں تقریباً 1,140 ہلاکتیں ہوئیں جن میں زیادہ تر عام شہری تھے۔

اسرائیل کے مطابق مزاحمت کاروں نے تقریباً 250 افراد کو یرغمال بنا لیا جن میں سے 132 بدستور قید میں ہیں۔ خیال ہے کہ ان میں سے کم از کم 24 ہلاک ہو چکے ہیں۔

غزہ کی وزارتِ صحت کے مطابق اسرائیل کی جوابی فوجی مہم میں کم از کم 22,835 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں جن میں زیادہ تر خواتین اور بچے ہیں۔

بیرباک اس دورے میں فلسطینی اتھارٹی کے وزیرِ خارجہ ریاض المالکی سے بھی ملاقات کریں گی۔ اس کے بعد انہیں مصر اور لبنان کا دورہ کرنا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں