ٹرک ڈرائیور کی لاپرواہی، سعودی ڈاکٹر عمرہ پر جاتے ہوئے خاندان سمیت جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں ایک ٹرک ڈرائیور کی مجرمانہ غفلت کے نتیجے میں گاڑی حادثے کا شکار ہوئی جس کے نتیجے میں ایک ماہر انکولوجسٹ اوران کے خاندان کے متعدد افراد جاں بحق ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب کے کنگ فہد میڈیکل سٹی کے ڈاکٹروں نے ٹریفک حادثے میں ہلاک ہونے والے اپنے ساتھی کی وفات پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا۔ انہوں نے بتایا کہ ان کے ایک ساتھی آنکولوجی کنسلٹنٹ ڈاکٹر جاعم الشبحی اپنے خاندان کے چار افراد کے ساتھ سامنے سے آنے والے ٹرک کے ساتھ گاڑی کے ٹکرانے سے جاں بحق ہو گئے۔

فوت ہونے والے ڈاکٹر کے ساتھی ڈاکٹر مشب علی العسیری نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ ان کے برادر ڈاکٹر جاعم عمرہ کے لیے جاتے ہوئے ایک خوفناک ٹریفک حادثے میں ان کی کار سامنے سے آنےوالی تیز رفتار گاڑی سے ٹکرا کر سڑک پرالٹ جانے کے نتیجے میں انتقال کر گئے۔

ڈاکٹر جاعم الشبحی
ڈاکٹر جاعم الشبحی

اس حادثے میں 13 افراد جاں بحق ہوئے۔ ڈاکٹر جاعم ان کے بہترین کولیگ تھے۔ وہ ایک صاحب علم، خوش اخلاق، بیماروں کے ہمدرد اور پابند صوم وصلوۃ تھے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ڈاکٹر جاعم بہت خوش تھا کیونکہ وہ اپنے اہل خانہ کے ساتھ عمرہ کے لیے جا رہے تھے۔ جب وہ المزاحمیہ پہنچے تو اس نے دیکھا کہ ایک پاکستانی ڈرائیور عوامی سڑک پر مخالف سمت سے ٹرک چلا رہا ہے۔ یہ ٹرک دو کاروں سے ٹکرا گیا جس میں ڈاکٹر جاعم کی کار بھی شامل تھی۔

انہوں نے کہا کہ "مرحوم ڈاکٹر کے 8 بچے ہیں، جن میں سے بڑا یونیورسٹی میں اور سب سے چھوٹا پرائمری اسکول میں ہے۔ ان کی بیوی اور پانچ بچے حافظ قرآن ہیں۔

اس حادثے میں فوت ہونے والوں میں ڈاکٹرجاعم محمد صالح الشبحي اليافعي، 21 سالہ أروى، 12 سالہ فضل،8 سالہ احمد ، پانچ سالہ جنى شامل ہیں جب کہ 15 سالہ دعاء اور 10 سالہ عائشہ انتہائی نگہداشت وارڈ میں زیر علاج ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں