فلسطین اسرائیل تنازع

اقوام متحدہ کوغزہ میں صحافیوں کی بڑی تعداد میں ہلاکتوں پر بہت تشویش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اغزہ میں جاری جنگ کے چوتھے ماہ کے آغاز پر دو مزید صحافیوں کی ہلاکت پراقوام متحدہ نے تشویش کا اظہار کیا ہے۔ ان دونوں کو کار پر جاتے ہوئے اسرائیلی فوج نے 'ٹارگیٹڈ بمباری کا نشانہ بنایا تھا۔ صحافیوں کی تازہ ہلاکتوں میں الجزیرہ سے وابستہ دو رپورٹر حمزہ وائل الدحدوح اور مصطفیٰ ابو ثریا شامل ہیں۔

اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کمیشن کی طرف سے سوشل میڈیا پلیٹ فارم 'ایکس' پر کہا گیا ہے' غزہ میں صحافیوں کی بڑی تعداد میں ہلاکتوں پر بہت تشویش ہے۔ '

انسانی حقوق کمیشن نے مزید کہا ہے ' صحافیوں کی ہلاکت، بشمول حمزہ وائل الدحدوح اور مصطفیٰ ابو ثریا کی اسرائیلی فوج کے ہاتھوں ہلاکت کی غیر جانبدارانہ تحقیقات ہونی چاہییں کہ انہیں کار پر جاتے ہوئے کیوں بمباری سے ہلاک کیا گیا۔' نیز بین الاقوامی قانون کی خلاف پرکارروائی کی جائے۔'

دونوں صحافی 'اے ایف پی' اور دوسرے صحافتی اداروں کے ساتھ بھی فری لانسر کے طور پر وابستہ تھے۔ اپنے پیشہ ورانہ فرائض کی ادائیگی کے لیے جارہے تھے۔ اس موقع پر تیسرے صحافی حازم رجب شدید زخمی ہو گئے۔

عینی شاہدین نے اے ایف پی کو بتایا ہے کہ ان صحافیوں کی گاڑی پر دو بار نشانہ بنایا گیا۔ پہلے گاڑی کے اگلے حصے کو نشانہ بنایا گیا اور بعدازاں الدحدوح کو نشانہ بنایا گیا جو ڈرائیور کے ساتھ والی سیٹ پر بیٹھا تھا۔ '

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوٹیرس کی نائب ترجمان فلورنسیا سوٹو نینو نے کہا' اس کی ہم فی الحال ہتصدیق نہیں کر سکتے، مگر جتنا ہم جانتے ہیں۔ غزہ میں بہت سے صحافی ہلاک ہو چکے ہیں، ہم بارہا ان کے پیشے کا احترام کرنے کا مطالبہ کر چکے ہیں ۔ تاکہ صحافی حضرات آزادانہ اور محفوظ طریقے سے کام کر سکیں، '

نیو یارک میں صحافیوں کے تحفظ کے لیے قائم ادار ' کمیٹی ٹو پروٹیکٹ جرنلسٹس' کا کہنا ہے کہ اب تک غزہ میں جاری جنگ کے دوران 79 صحافی ہلاک ہو چکے ہیں۔ ان میں سے 70 کے قریب فلسطینی صحافی تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں