اسرائیلی جہازوں کو سکیورٹی کی فراہمی امریکا کا معاندانہ عمل ہے: حوثی لیڈر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی حمایت یافتہ یمن کی حوثی ملیشیا کے ایک سینیر عہدیدار نے کہا کہ بحیرہ احمرمیں اسرائیلی بحری جہازوں کو امریکا کی طرف سے سکیورٹی کی فراہمی ایک دشمنانہ اقدام ہے۔ ہم اسے روکنے اور ان کا مقابلہ کرنے کا حق رکھتے ہیں۔

یمنی حوثی گروپ کے سیاسی بیورو کے رکن حزام الاسد نے جمعرات کو کہا کہ امریکی جنگی جہاز بحیرہ احمر سے گذرنے والے اسرائیلی بحری جہازوں کو سکیورٹی فراہم کر رہے ہیں۔ ہم اسے ایک "دشمنانہ اقدام" سمجھتے ہیں اور اس بات پر زور دیتے ہیں حوثی اس کا مقابلہ کریں گے۔

امریکا نے اس سے قبل ایک کثیر القومی اتحاد کی تشکیل کا اعلان کیا تھا جس میں کئی ممالک نے بحیرہ احمر اور خلیج عدن میں مشترکہ گشت کے ذریعے حصہ لیا تھا۔ اس آپریشن کو "خوشحالی گارڈین" کہا جاتا تھا تاکہ سمندری نقل و حمل کے جہازوں کو درپیش خطرات کا مقابلہ کیا جا سکے۔

کل بدھ کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے 11 ارکان کی اکثریت کے ساتھ امریکا اور جاپان کی طرف سے تیار کردہ ایک قرارداد منظور کی، جس میں بحیرہ احمر سے گذرنے والے بحری جہازوں پر حوثیوں کے حملوں کو فوری طور پر روکنے کا مطالبہ کیا گیا۔

لیکن حوثی سیاسی بیورو کے ایک رکن حزام الاسد نے اس فیصلے کو امریکہ کی دوسرے ممالک کوبحیرہ احمر میں پھنسانے کی کوشش کے مترادف قرار دیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں