فلسطینیوں کی جبری ہجرت پر زور دینے والے اسرائیلی وزراء کو نکالنے کا امریکی مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی ویب سائٹ Axios نے رپورٹ کیا ہے کہ کچھ ڈیموکریٹک قانون سازوں نے واشنگٹن میں اسرائیلی سفیر سے ملاقات کے دوران فلسطینیوں کی نقل مکانی کے بارے میں بیانات کی وجہ سے اسرائیلی حکومت سے وزراء ایتمار بن گویر اور بزلئیل سموٹریچ کوحکومت بے دخل کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

امریکی قانون سازوں نے اس بات کی تصدیق کی کہ ان بیانات نے اسرائیل کے اتحادیوں، خاص طور پر صدر بائیڈن کی انتظامیہ کے ساتھ مزید تناؤ پیدا کیا۔ نیتن یاہو نے ان بیانات کا سامنا نہیں کیا اور اندرونی سیاسی وجوہات کی بناء پر خاموش رہے۔

یہ بات ایسے وقت میں سامنے آئی ہیں جب اقوام متحدہ کے انڈر سیکرٹری جنرل برائے انسانی امور اور ہنگامی امداد کے کوآرڈینیٹر مارٹن گریفتھس نے کہا ہے کہ وہ غزہ سے فلسطینی شہریوں کی "بڑے پیمانے پر منتقلی" کی حوصلہ افزائی کے منصوبوں کے بارے میں اسرائیلی وزراء کے بیانات پر "سخت تشویش" کا شکار ہیں۔

گریفتھس نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کو دیے گئے ایک بیان میں کہا کہ اگر فلسطینیوں کو ان کے علاقوں سے بے دخل کرنے کی کارروائی نہ کی گئی تو یہ انسانیت پرایک ایسا داغ بن جائے گا جسے مٹایا نہیں جا سکتا۔ انہوں نے جنگ کو جلد از جلد ختم کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں