حزب اللہ پورے لبنان کا میدان جنگ میں تبدیل کر سکتی ہے: اسرائیلی آرمی چیف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اسرائیلی فوج کے چیف آف اسٹاف جنرل ہرزی ہیلیوی نے کہا ہے کہ حزب اللہ پورے لبنان کو میدان جنگ میں تبدیل کر سکتی ہے۔ جنگ کی صورت میں حزب اللہ کو اس کی بھاری قیمت ادا کرنا پڑے گی۔

اسرائیلی اخبار ’معاریو‘ کے مطابق ہرزی ہیلیوی نے ہفتے کی شام ایک تقریر میں مزید کہا کہ "ہم لبنان کی فضائی حدود میں آزادانہ طور پر اپنا کام کرتے ہیں، کسی بھی خطرے پر حملہ کرتے ہیں اور حزب اللہ کو بھاری قیمت چکانے پرمجبور کرتے ہیں" ۔

انہوں نے کہا کہ "شمال میں سکیورٹی کی حقیقت ان دنوں ایک نئی شکل اختیار کرنا شروع کر چکی ہے۔ ہم الرضوان کے عسکریت پسندوں کو سرحد سے دور دھکیل رہے ہیں۔ہم حزب اللہ کی ان صلاحیتوں کو نقصان پہنچا رہے ہیں جو اس نے برسوں پہلے بنائی تھیں"۔

اسرائیلی آرمی چیف آف سٹاف نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ "جنوبی لبنان کا علاقہ ایک جنگی علاقہ ہے اور جب تک وہاں حزب اللہ کام کرے گا تب تک رہے گا"۔

انہوں نے وضاحت کی کہ حزب اللہ نے "حماس کے لیے ڈھال" کے طور پر کام کرنے کا انتخاب کیا مگر اسے اس کی قیمت ادا کرنا پڑ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر غزہ جنگ روکنے کےلیے شمالی محاذ کو گرم کرنے کی کوشش کی گئی تو حزب اللہ کو اس کی بھاری قیمت ادا کرنا پڑے گی۔

ہیلیوی نے کہا کہ وہ سلامتی کی صورتحال کو اس انداز میں تبدیل کرنے کے لیے تیار اور پرعزم ہیں جس سے رہائشیوں کو شمال اور جنوب میں اپنے گھروں کو مکمل حفاظت کے ساتھ واپس جانے کا موقع ملے۔

انہوں نے کہا کہ اسرائیل بیک وقت اور مختلف شدت کے ساتھ کئی میدانوں میں جنگ کر رہا ہے اور ہر جگہ کام کر رہا ہے۔

اسرائیلی آرمی چیف آف اسٹاف نے کہا کہ اسرائیلیوں کو قتل کرنے والوں کو غزہ ، مغربی کنارے اور دنیا کے دیگر میدانوں کہیں بھی جائے پناہ نہیں ملے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں