سعودی ماہرین نے پودوں میں ’رحم کے کینسر‘ کا ممکنہ علاج دریافت کرلیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب کی جازان یونیورسٹی کے محققین نے روایتی کیموتھراپی کا ایک قدرتی متبادل دریافت کیا ہے، جس کے امید افزا نتائج ’بیضہ دانی کے کینسر‘ کے علاج کے لیے مفید ثابت ہوئے ہیں۔

ماہرین کا خیال ہے کہ خواتین میں موت کا باعث بننے والی سب سے نمایاں بیماریوں میں سے ایک بیضہ دانی کا کینسربھی ہے۔

کالج آف اپلائیڈ میڈیکل سائنسزکے ایسوسی ایٹ پروفیسر ڈاکٹر عبداللہ الفرسانی اور جازان یونیورسٹی سے ان کی تحقیقاتی ٹیم تازہ ترین تحقیق کے ایک اہم نتیجے تک پہنچی ہے جس میں بیضہ دانی کے کینسر کے متبادل علاج کے طور پر پودوں کے عرق کے استعمال پر روشنی ڈالی گئی ہے۔

"ایلوپیٹورین"

اس تناظرمیں الفرسانی نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کو بتایا کہ "بیضہ دانی کا کینسر ان سب سے نمایاں بیماریوں میں سے ایک ہے جو خواتین میں موت کا باعث بنتی ہیں۔ یہ اکثر اس وقت دریافت ہوتا ہے جب مرض آخری درجے اور مراحل میں ہوتا ہے۔ اس کے نتائج خراب ہوتے ہیں۔ کینسر کے روایتی علاج میں سرجری، کیموتھراپی، ریڈی ایشن تھراپی جیسے علاج کے دیگر طریقے شامل ہیں، لیکن وہ خواتین میں زہریلے پن اور کینسر کے دوبارہ ہونے کا ایک اہم خطرہ اپنے اندر رکھتے ہیں"۔

انہوں نے وضاحت کی کہ اس مسئلے کو حل کرنے کے لیے پودوں کے عرق کو روایتی کیمیائی ادویات کے قدرتی متبادل کے طور پر استعمال کیا جا سکتا ہے۔

حالیہ مطالعات کے مطابق پودوں کے عرق ٹیومر اور کینسر سے لڑنے اور کینسر کے خلیوں کی نشوونما کو روکنے میں حوصلہ افزا اثرات دکھاتے ہیں۔

انہوں نے اس تحقیق میں "ایلوپیٹورین" کے نام سے مشہور پودوں کے عرق کی تاثیر کو بیضہ دانی کے کینسرکے ممکنہ علاج کے طور پر جانچا گیا کیونکہ "ایلوپیٹورین" ایک قدرتی کیمیائی مرکب ہے جو مضبوط حیاتیاتی خصوصیات کے حامل دواؤں کے پودوں کی ایک قسم سے الگ تھلگ ہے۔ اس میں اینٹی کینسر، اینٹی سوزش اور آرام دہ سرگرمی کی خصوصیات ہیں۔

ڈاکٹر الفرسانی نے مزید کہا کہ "مطالعہ سے معلوم ہوا کہ "ایلوپیٹورین‘‘ رحم کے کینسر کے خلیات کی نشوونما کو واضح طور پر کم کرنے اور ان کی پروگرام شدہ موت کو ٹیومر میں متحرک کرنے کے لیے کام کرتا ہے۔ اس کے امید افزا نتائج بیضہ دانی کے کینسر کے علاج کے لیے ایک موثر دوا کے طور پر ان قسام کے پودوں کے استعمال کے امکان کی نشاندہی کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں