سعودی شہری نےقصیم میں اپنے فارم ہاؤس کو چھپکلی کے فارم میں تبدیل کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے علاقے القصیم میں ایک شہری نے اپنے فارم ہاؤس کو چھپکلی کی پرورش اورنگہداشت کے فارم میں تبدیل کردیا۔

سعودی عرب میں کسی شہری کا جنگلی حیات کی پرورش کا یہ اقدام انوکھا نہیں۔ جب سے حکومت نے وژن 2030 میں جنگی حیات کے تحفظ کو اپنے ترجیحی پروگرامات میں شامل کیا ہے تب سے سعودی عرب میں نجی سطح پر بھی جنگلی حیات کی پرورش کا رحجان اور دلچسپی بڑھی ہے۔

چھپکلی کے فارم کے مالک شہری نواف الرحیمی نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کو قصیم کے علاقے میں اپنے فارم کو چھپکلیوں کے نجی ذخیرے میں تبدیل کرنے کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ "مجھے بچپن سے ہی چھپکلی پسند ہے۔ خاص طور پر جب میں چھپکلیوں کا شکار کرتا تھا۔ اب ان کا شکار ممنوع ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ حشرات الارض اوررینگنے والے جانوروں میں چھپکلی کی نسل خطرے سے دوچار ہے۔

مجھےفارم کو چھپکلی کے ذخیرے میں تبدیل کرنے کا خیال تقریباً 25 سال پہلے آیا جس کے بعد میں نے دن رات اس پر کام کیا۔"

انہوں نے مزید کہا کہ "میں نے اپنے فارم کو کئی حصوں میں تقسیم کیا۔ ہر حصہ چھپکلی کی ایک قسم کے لیے وقف ہے۔ میں نے ان کی افزائش نسل شروع کی۔ ان کا رویہ انسانوں کے لیے وحشی اور دشمنی سے دوستانہ اور ہمارے ساتھ نرمی سے پیش آنے میں بدل گیا ہے"۔

انہوں نے نیشنل سینٹر فار وائلڈ لائف کے ساتھ اپنے تعاون کے بارے میں کہا کہ وہ انہیں چھپکلی کی پیداوار فراہم کرتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ چھپکلی سال میں ایک بار اگست اور ستمبر کے مہینوں میں دوبارہ پیدا ہوتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں