شمالی عراق میں امریکی فوجی مرکز پر داغے گئے تین مسلح ڈرون مار گرائے گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

عراقی کردستان کی انسدادِ دہشت گردی سروس نے بتایا کہ منگل کو شمالی عراق کے اربیل ہوائی اڈے پر تین مسلح ڈرونز کو مار گرایا گیا جہاں امریکی اور دیگر بین الاقوامی افواج تعینات ہیں۔

سروس کے بیان میں یہ نہیں بتایا گیا کہ آیا کوئی جانی یا انفراسٹرکچر کا نقصان ہوا ہے۔

ایران کی سپاہِ پاسداران انقلابِ اسلامی نے کہا کہ انہوں نے عراق کے نیم خودمختار کردستان کے علاقے میں اسرائیل کی موساد کی غیر ملکی انٹیلی جنس سروس کے مبینہ "جاسوس ہیڈ کوارٹر" پر حملہ کیا تھا جس کے چند گھنٹے بعد منگل کا یہ حملہ ہوا۔

انسدادِ دہشت گردی سروس نے ایک بیان میں کہا کہ ڈرون کو مقامی وقت کے مطابق صبح 5:05 بجے کے قریب روکا اور مار گرایا گیا۔

فوری طور پر کوئی ذمہ داری قبول نہیں کی گئی۔ عراق میں اسلامی مزاحمت نامی ایک گروپ جو ایران سے منسلک عراقی ملیشیا کا ایک سرپرست گروپ ہے، نے اسی طرح کے سابقہ حملوں کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

عراق میں اور شام میں سرحد کے اس پار موجود امریکی اور بین الاقوامی افواج درجنوں حملوں کے درمیان ہائی الرٹ پر ہیں جن میں زیادہ تر کی ذمہ داری عراق میں اسلامی مزاحمتی تنظیم نے قبول کی ہے۔ ایران کی حمایت یافتہ حماس تحریک کے خلاف غزہ جنگ میں واشنگٹن کی اسرائیل کی پشت پناہی ان حملوں کی وجہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں