غزہ میں اسرائیلی فوجیوں کی ایک گھرمیں آہنی سیف کو کھولنے کی ویڈیو جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی ایک ویڈیو کلپ میں دکھایا گیا ہے کہ اسرائیلی فوجی ویلڈنگ کے آلے کا استعمال کرتے ہوئے غزہ میں قبضے میں لیے گئے ایک گھر میں فولاد کا ایک سیف کھولنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

ویڈیو میں اس گھرمیں ہونے والی تباہ اور بربادی کو دیکھا جا سکتا ہے۔

منگل کے روز غزہ کی پٹی میں کشیدگی اور لڑائی اپنے عروج پررہی۔ جب کہ جنگ کے خاتمے یا جنگ بندی کے کوئی آثار نظر نہیں آ رہے ہیں۔

زمین پر ہونے والی تازہ ترین پیش رفت میں اسرائیلی میڈیا نے اطلاع دی ہے کہ نیتیووٹ اور غزہ کے اطراف میں درجنوں راکٹ فائر کیے گئے، جب کہ العربیہ اور الحدث کے نامہ نگار نے بتایا کہ غزہ سے باہر تقریبا 50 راکٹ فائر کیے گئے۔

غزہ سے ایک ایسے وقت میں راکٹ فائرکیے گئے ہیں جب دوسری طرف اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ اس نے فلسطینی عسکریت پسندوں کی کمر توڑ دی ہے اور ان کی راکٹ فائر کرنے کی صلاحیت کو تباہ کردیا ہے۔

میڈیا نے بتایا کہ غزہ کی پٹی کے شمال میں جبالیہ پراسرائیلی فضائی حملے کے علاوہ غزہ کی پٹی کے جنوب میں خان یونس پر اسرائیلی فضائیہ اور توپ خانے سے حملے کیے گئے۔

فلسطینی میڈیا نے آج اطلاع دی ہے کہ غزہ کی پٹی کے جنوب میں خان یونس میں ایک گھر پر اسرائیلی بمباری میں کم از کم 11 افراد مارے گئے۔یروشلم پوسٹ نے اسرائیلی فوج کے حوالے سے بتایا کہ جنوب میں لڑائیوں میں فلسطینی عسکریت پسندوں کے ساتھ جھڑپ میں ایک اہم افسر ہلاک ہوگیا۔

اسرائیلی فوج نے کہا کہ اس کی فورسز نے شمالی غزہ میں 9 فلسطینی عسکریت پسندوں پر بمباری کی اور تقریباً 100 راکٹ لانچروں کے مقامات کی نشاندہی کی۔

درایں اثناء اسرائیلی وزیر دفاع یوآو گیلینٹ نے اعلان کیا ہے کہ شمالی غزہ کی پٹی میں شدید لڑائی ختم ہو گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ کہا کہ خان یونس میں بھی لڑائی جلد ختم ہو جائے گی۔

گیلینٹ نے جنگ بندی کے مطالبات کو مسترد کرتےہوئے کہا کہ حماس پر فوجی دباؤ ہی یرغمالیوں کے تبادلے کی ڈیل کا اہم ذریعہ ہوگا۔

انھوں نے کہا کہ موجودہ جنگ کے آغاز کے 100 دن بعد غزہ کی پٹی کے شمالی حصے میں "پرتشدد لڑائی کا مرحلہ" ختم ہو گیا ہے۔

انہوں نے ایک پریس کانفرنس میں مزید کہا کہ "جنوبی غزہ کی پٹی میں ہم جلد ہی اس کامیابی کو پہنچ جائیں گے جس کی ہم نے منصوبہ بندی کی تھی۔" انہوں نے کہا کہ ہم زمین پر اپنی کارروائیوں کو اس میدانی حقیقت کے مطابق ڈھالتے ہیں جو ہمارے لیے واضح ہے اور ہماری فوجی کامیابیوں کے مطابق ہے"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں