شاہی خاندان سے باہر سے وزیرخارجہ کا تقرر، نئے امیرکویت نے منفرد مثال قائم کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

خلیجی ریاست کویت کے نئے امیر نے نئی حکومت میں خلاف روایت شاہی خاندان سے باہر وزارت خارجہ کا منصب ایک سابق سفارت کار کو سونپ کر ایک نئی اور منفرد نظیر قائم کی ہے۔

یہ تبدیلی نئے امیر کویت الشیخ مشعل الاحمد الجابر الصباح کی طرف سے ’اصلاحات و ترقی‘ پروگرام کی عکاسی کرتی ہے۔

وزیراعظم شیخ محمد صباح ال سالم الصباح
وزیراعظم شیخ محمد صباح ال سالم الصباح

کویت کی خبر رساں ایجنسی "کونا" نے رپورٹ کیا کہ امیر کویت نے بدھ کے روز الشیخ ڈاکٹر محمد صباح السالم الصباح کی سربراہی میں نئی کابینہ کی تشکیل کا فرمان جاری کیا۔

کویت کی تاریخ میں پہلی بار ارجنٹائن میں سابق کویتی سفیر عبداللہ آل یحییٰ کو وزیر خارجہ مقرر کیا گیا۔ اس قبل یہ عہدہ خصوصی طور پر حکمران خاندان کے افراد کے پاس رہا ہے۔

وزیر خارجہ عبداللہ ال یحیی۔
وزیر خارجہ عبداللہ ال یحیی۔

نئی کابینہ 13 وزراء پر مشتمل ہے، جن میں حکمران خاندان کے دو وزراء شامل ہیں۔ الشیخ فہد یوسف الصباح ریٹائرڈ بریگیڈیئر جنرل ہیں انہیں دفاع کا قلمدان اور قائم مقام وزیر داخلہ کے عہدےپر تعینات کیا گیا ہے۔ الشیخ فراس سعود المالک الصباح کو سماجی امور کی وزارت اور کابینہ کے امور کے قائم مقام وزیر مملکت کا عہدہ سونپا گیا ہے۔

وزیر تعمیرات عامہ نورا المشان
وزیر تعمیرات عامہ نورا المشان

نورا المشعان کویت کی نئی حکومت میں واحد خاتون وزیر ہیں۔ انہیں وزارت محنت اور میونسپل امور کی وزیر مقرر کیا گیا ہے۔

نوجوان رکن پارلیمنٹ داؤد سلیمان معرفی تین وزارتوں قومی اسمبلی کے امور، مواصلات اور امورِ نوجوانان کے قلم دان سونپے گئے ہیں۔

پچھلی حکومت کے صرف تین وزراء موجودہ حکومت میں شامل ہیں۔ ان میں وزیر اطلاعات عبدالرحمن المطیری، وزیر صحت احمد العوضی اور وزیر سماجی امور الشیخ فراس سعود المالک الصباح شامل ہیں۔

کویتی خبر رساں ادارے کے مطابق نو منتخب وزیراعظم اور نئے وزراء نے بدھ کی سہ پہر بیان محل میں امیرکویت سامنےدستورپر حلف اٹھایا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں