اپنے پوتوں کے قتل کا ماتم کرنے والا بزرگ فلسطینی ابو ضیا اسرائیلی بمباری میں ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ کی پٹی میں اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں ابو ضیا نامی ایک بزرگ فلسطینی بھی جاں بحق ہوگیا ہے جسے کچھ عرصہ قبل غزہ پر اسرائیلی بمباری میں ہلاک ہونے والی اس کے دو پوتوں کے ساتھ ماتم کرتے ہوئے ایک ویڈیو میں دیکھا گیا تھا۔

اس ویڈیو میں ابو ضیاء کو اپنی مقتول ننھی پوتی’ریم‘ اور طارق کی لاشیں اٹھائے’جان کی جان‘ کہتے سنا گیا تھا۔ ابو ضیا اپنی پوتی کی ہلاکت پر دل گرفتہ تھا اور اس کی ویڈیو نے سوشل میڈیا پر بڑے پیمانے پر اس کے ساتھ ہمدردی کے جذبات جنم دیے تھے۔

غزہ کی پٹی پراسرائیلی حملے کے نتیجے میں ان کی ہلاکت کی خبروں کے بعد ایک بار پھر فلسطینی دادا، خالد نبھان المعروف نام ابو ضیا کا نام سامنے آیا ہے۔

سوشل میڈٰیا پر ابو ضیا کے ساتھ ہمدردی کرنے والے آج اس کی وفات پر ایک اور صدمے کا شکار ہیں۔

قابل ذکر ہے کہ سوگوار فلسطینی مہینوں قبل اپنے دو پوتوں ریم اور طارق کی لاشیں ہاتھوں میں اٹھائے نمودار ہوئے۔ انہیں غزہ کی پٹی پر اسرائیلی حملے میں جان سے مار دیا گیا تھا اور ان بچوں کی موت پر ہرآنکھ اشک بار تھی۔

ابو ضیا نے مقتول پوتے طارق کے چہرے کو چھوا۔ اسے یقین نہیں آ رہا تھا کہ اس کے پودے اس بے رحم بمباری کی نذر ہوگئے تھے۔ وہ کبھی اپنے پوتے کوکفن سے مضبوطی سے لپیٹتا اور کبھی اس کا چہرہ ڈھانپتا۔

ابو ضیا ان بچوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے بار بار کہتے کہ ’یہ ان کے لیے روح کی روح‘ کا درجہ رکھتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں