عراق میں ڈرون گر کر تباہ : امریکی عہدیدار، ایران نواز گروپ کا مار گرانے کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی عہدیدار کے مطابق بغداد کے شمال میں ایک امریکی ڈرون گر کر تباہ ہو گیا۔ ایران نواز عسکریت پسندوں کا دعویٰ ہے کہ انہوں نے بغیر پائلٹ کے طیارے پر فائرنگ کی۔

امریکی اہلکار نے خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کو بتایا کہ "امریکی ڈرون بلاد ایئر بیس، عراق کے قریب جمعرات کی رات میں گر کر تباہ ہو گیا۔"

امریکی عہدیدار کے مطابق "عراقی سیکورٹی فورسز نے طیارے کے ملبے کو قبضے میں لے لیا ہے اور اس حادثے میں کسی شخص کے زخمی ہونے کی اطلاع نہیں ہے۔ حادثے کی وجہ کی تحقیقات جاری ہے۔"

ایران نواز مسلح گروہوں کے اتحادپر مشتمل اسلامی مزاحمت عراق نے جمعہ کو کہا کہ اس نے امریکی MQ-9 ڈرون پر فائر کیا جو کہ عراقی فضائی حدود میں محو پرواز تھا۔

گروپ نے ایک بیان میں کہا "مجاہدین نے کل امریکی قبضے سے تعلق رکھنے والے ایک MQ-9 ڈرون کو نشانہ بنایا۔"

پینٹاگون کے مطابق عراق اور شام میں امریکی اور اتحادی افواج اکتوبر کے وسط سے لے کر اب تک تقریباً 140 حملوں کا شکار ہو چکی ہیں۔

4 جنوری کو وسطی بغداد میں امریکی حملے میں ایک ایران نواز کمانڈر مارا گیا جس کے بارے میں واشنگٹن نے کہا کہ وہ امریکی فوجیوں پر حملوں میں ملوث تھا ۔ اس اقدام کے نتیجے میں عراقی حکومت نے داعش کے خلاف امریکی قیادت میں بین الاقوامی اتحاد کو ملک چھوڑنے کا مطالبہ کیا۔

داعش کے خلاف عالمی اتحادکے طور پر امریکہ کے عراق میں 2500 اور شام میں 900 فوجی تعینات ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں