ایران کا دمشق میں اسرائیل پر حملے کا الزام، بدلہ لینے کا عہد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران نے الزام عاید کیا ہے کہ کل ہفتے کوشام کے دارالحکومت دمشق میں حملے میں پاسداران انقلاب کے اہلکاروں کی ہلاکت کا ذمہ داراسرائیل ہے۔

خیال رہے کہ کل ہفتے کو دمشق کی المزہ کالونی میں کیے گئےحملے میں پاسداران انقلاب کے متعدد اہلکار ہلاک ہوگئے تھے۔ ایران نے اس حملے کا بدلہ لینےکا اعلان کیا ہے۔

ایرانی صدرابراہیم رئیسی نے تصدیق کی ہے کہ شام میں پاسداران انقلاب کے 5 اہلکاروں کی ہلاکت کا باعث بننے والے اسرائیلی حملے کا جواب دیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ "اسرائیلی حملہ جس نے شام میں ہمارے مشیروں کو نشانہ بنایا وہ امریکی حمایت سے کیا گیا تھا"۔

دوسری جانب ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان نے کہا کہ شام میں ہمارے فوجی مشیروں کا کام جاری رہے گا۔

ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان ناصر کنعانی نے بھی ایک بیان میں اس کارروائی کی مذمت کرتے ہوئے اسے"خطے میں عدم استحکام اور عدم تحفظ پھیلانے کی ایک مایوس کن کوشش" قرار دیا۔

ایرانی پاسداران انقلاب نے اعلان کیا ہے کہ شام کے دارالحکومت دمشق میں اسرائیلی حملے میں ہلاک ہونے والے اس کے ارکان کی تعداد پانچ ہو گئی ہے۔

مہرایجنسی کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں پاسداران انقلاب نے کہا ہے کہ صیہونی حکومت کے حملے میں زخمی ہونے والوں میں سے ایک اہلکار زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا۔

المزہ کالونی میں ہونے والی بم دھماکے کے بعد کا منظر
المزہ کالونی میں ہونے والی بم دھماکے کے بعد کا منظر

سرکاری ٹیلی ویژن نے خبر دی ہے کہ نشانہ بننے والی عمارت دمشق میں ایرانی مشیروں کی رہائش گاہ تھی۔

اگرچہ اسرائیل کی طرف سے ابھی تک کوئی تبصرہ سامنے نہیں آیا ہے، جس نے شام میں ایران سے منسلک اہداف کے خلاف بمباری کی مہم طویل عرصے سے جاری رکھی ہوئی ہے۔ حماس کی جانب سے 7 اکتوبر کو اسرائیل پر شروع کیے گئے حملے کے بعد اس نے مزید مہلک حملوں کا سلسلہ شروع کیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں