سعودی عرب:انتہا پسندانہ سوچ کے خلاف جنگ،شدت پسندانہ خیالات پر مبنی43 ملین مواد حذف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی حکومت کی مملکت میں اعتدال پسندانہ افکار وخیالات کی ترویج اور رجعت پسندانہ نظریات پر مبنی مواد کے خلاف جنگ جاری ہے۔

مملکت کے گلوبل سینٹر فار کامبیٹنگ ایکسٹریمسٹ تھاٹ [انسداد انتہا پسندانہ افکار مرکز] "اعتدال" نے "ٹیلی گرام" پلیٹ فارم کے تعاون سے 6 ہزار دو سو انتہا پسند چینلز کو بند کرنے کے علاوہ 43.8 ملین سے زیادہ انتہا پسندانہ مواد کو حذف کر دیا۔

مرکزنے بتایا کہ گذشتہ سال کی پہلی سہ ماہی میں 1,840 چینلز اور 6.0 ملین مواد کو حذف کیا گیا یا اس کی آئیڈیز بند کی گئیں۔ گذشتہ سال کی آخری سہ ماہی کے دوران انتہا پسندانہ پروپیگنڈہ پھیلانے کی سرگرمیوں میں اضافے کی نگرانی کی گئی۔ یہ پروپیگنڈہ تین دہشت گرد تنظیموں داعش، تحریر شام گروپ اور القاعدہ کی طرف سے پھیلایا جا رہا تھا۔ اسے سوشل میڈیا سے ہٹا دیا گیا۔

مرکز نے مزید کہا کہ اس نے 3.7 ملین انتہا پسندانہ مواد ہٹا دیا اور دہشت گرد تحریر الشام کے 207 انتہا پسند چینلز کو بند کر دیا۔2.2 ملین انتہا پسندانہ مواد کو بھی ہٹا دیا اور القاعدہ سے تعلق رکھنے والے 190 انتہا پسند چینلز کو بند کر دیا۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ گلوبل سینٹر فار کامبیٹنگ ایکسٹریمسٹ آئیڈیالوجی "اعتدال" اور "ٹیلی گرام" پلیٹ فارم کے درمیان مشترکہ تعاون نے فروری میں تعاون کے آغاز سے لے کر اب تک 58.8 ملین انتہا پسندانہ مواد کو ہٹانے اور 13 ہزار سے زیادہ انتہا پسند چینلز کو بند کردیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں