مشرق وسطیٰ

حماس کی حکومت اور یرغمالیوں کی قید باقی رکھنے والا 'سیز فائر' نامنظور: اسرائیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسرائیل غزہ میں کسی ایسے سیز فائر پر اتفاق نہیں کرے گا جس کے نتیجے میں اسرائیلی یرغمالی غزہ میں قید رہیں اور حماس کا اقتدار غزہ پر باقی رہے۔ اس امر کا اعلان اسرائیلی ترجمان ایلون لیوی نے منگل کے روز کیا ہے۔

اسرائیلی ترجمان نے مزید کہا 'اسرائیلی یرغمالیوں کی رہائی کے لئے کوششیں جاری ہیں۔ لیکن انہوں نے اس بارے میں جواب دینے سے انکار کر دیا کہ زندگیاں کب تک سولی پر لٹکی رہیں گی۔ واضح رہے اسرائیلی حکومت پر ایک بار پھر یرغمالیوں کی رہائی کے لئے اندرونی طور پر دباؤ بڑھ رہا ہے۔

الیون لیوی نے غزہ میں جنگ بندی کے بارے میں خبروں پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا 'ہمارے جنگی اہداف میں کوئی تبدیلی نہیں ہے۔ حماس کی مکمل تباہی، اس کی جنگی صلاحیت کا خاتمہ اور اسرائیلی یرغمالیوں کی واپسی کے ہمارے اہداف واضح ہیں۔‘

اس لئے ایسے کسی 'سیز فائر' پر اتفاق نہیں ہو گا جس میں یرغمالیوں کی عدم رہائی اور غزہ پر حماس کی حکومت باقی رہ سکتی ہو۔

ترجمان نے ایک اور سوال پر کہا 'اس سے زیادہ کچھ بیان کر نے کا نہیں ہے۔' اسرائیلی پارلیمنٹ پر یرغمالیوں کے گھر والوں کی چڑھائی اور غزہ میں ایک ہی روز میں 24 اسرائیلی فوجیوں کی ہلاکت کے بعد یہ اسرائیلی ترجمان کا پہلا بیان ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں