ہوم ڈلیوری کے شعبے کی تنظیم کے لئے نئے سعودی ضوابط کا اعلان

نئے ضوابط کا مرحلہ وار اطلاق سب سے پہلے شعبے سے وابستہ سعودیوں سے ہو گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی ٹرانسپورٹ اتھارٹی نے ہوم ڈلیوری کے شعبے کو منظم کرنے اور اس میں بہتری لانے کے لیے نئے ضوابط کا اعلان کیا ہے۔ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کے نئے ضوابط مرحلہ وار لاگو ہوں گے۔

نئے ضوابط میں کہا گیا ہے کہ ’فوڈ ڈلیوری اور ہوم ڈلیوری میں کام کرنے والے غیر ملکیوں کو 14 ماہ میں ہلکی ٹرانسپورٹ کمپنیوں سے وابستہ ہونا پڑے گا‘۔

ضوابط میں ہلکے ٹرانسپورٹ ذرائع میں اشتہارات کے استعمال کا بھی جائزہ لیا گیا ہے تاہم اس کے لیے وزارت بلدیات ودیہی أمور کے ساتھ افہام و تفہیم ضروری ہو گی۔

نئے ضوابط میں ہوم ڈلیوری کے لیے موٹر سائیکلوں کے استعمال پر بھی غور کیا گیا ہے۔

ہوم ڈلیوری کمپنیوں کو اس بات کا بھی پابند کیا گیا ہے کہ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کے ساتھ وابستہ ہو جانے کے بعد خود کار نظام کے تحت ملازمین کے چہروں کی شناخت کی جائے۔

نئے ضوابط میں اس بات کو بھی شامل کیا گیا ہے کہ ہوم ڈلیوری کے شعبے سے وابستہ غیر ملکی کارکنان کو یکساں یونیفارم پہننا چاہئے۔

اتھارٹی نے کہا ہے کہ ’نئے ضوابط پر مرحلہ وار عمل کیا جائے تاکہ ہوم ڈلیوری کا شعبہ منظم کیا جا سکے اور اس کا آغاز شعبے سے وابستہ سعودیوں سے ہو گا جنہیں سب سے پہلے ٹرانسپورٹ اتھارٹی سے وابستہ ہونا ہو گا۔

’اس کے ساتھ سعودیوں کو شعبے میں کام کرنے کی آزادی دی جائے گی اور ساتھ ہی ریجنوں کے حساب سے غیر سعودیوں کو ہوم ڈلیوری میں کام کرنے سے روکا جائے گا‘۔

سعودی ٹرانسپورٹ اتھارٹی نے کہا ہے کہ ’تمام نئے ضوابط ہوم ڈلیوری کے شعبے کو منظم کرنے اور خدمات کی بہتری کے علاوہ نظم وضبط پیدا کرنے کے لیے ہیں‘۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں