فلسطین اسرائیل تنازع

غزہ: خان یونس میں’اونروا‘ کی سب سے بڑی پناہ گاہ کے اطراف میں بمباری سے اموات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطینی پناہ گزینوں کے لیے اقوام متحدہ کی ریلیف اینڈ ورکس ایجنسی (یو این آر ڈبلیو اے) کے کمشنر فلپ لازارینی نےکہا ہے کہ جنوبی غزہ کے علاقے خان یونس میں ایجنسی کی سب سے بڑی پناہ گاہ کے ارد گرد لڑائی کے نتیجے میں کم از کم چھ افراد ہلاک اور دیگر زخمی ہوئے۔

"ہسپتالوں کے اندر محاصرہ"

لازارینی نے ’ایکس‘ پلیٹ فارم پر مزید کہا کہ "خان یونس کے چند باقی ہسپتالوں میں عملہ، مریض اور بے گھر افراد پھنسے ہوئے ہیں کیونکہ شدید لڑائی جاری ہے۔"

انہوں نے تمام فریقین پر زور دیا کہ وہ احتیاط کریں اور شہریوں، صحت کی سہولیات، طبی نگہداشت کے کارکنوں اور اقوام متحدہ کی تنظیموں کے دفتر کو بین الاقوامی قوانین کے مطابق تحفظ فراہم کریں۔

"خان یونس کا گھیراؤ"

قبل ازیں منگل کو اسرائیلی فوج نے جنوبی غزہ کے خان یونس شہر کو گھیرے میں لینے کا اعلان کیا تھا، جس میں حالیہ ہفتوں میں لڑائی شدت اختیار کرگئی ہے۔

اسرائیلی فوج نے خان یونس اور پناہ گزین کیمپ کے علاقوں کے رہائشیوں کو وارننگ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ فوری طور پر المواسی کے علاقے میں چلے جائیں۔

24 فوجی مارے گئے

یہ پیش رفت اس علاقے میں 24 اسرائیلی فوجیوں کی ہلاکت کے بعد سامنے آئی ہے، جس سے 27 اکتوبر 2023 کو غزہ کی پٹی پر زمینی حملے کے آغاز کے بعد سے ہلاکتوں کی تعداد تقریباً 218 ہو گئی ہے۔

7 اکتوبر کو جنگ کے آغاز سے اب تک ہلاک ہونے والوں کی تعداد اسرائیل کے سرکاری اعداد و شمار کے مطابق 535 تک پہنچ گئی ہے۔

قابل ذکر ہے کہ حالیہ عرصے کے دوران اسرائیلی افواج نے جنوبی غزہ کی پٹی بالخصوص خان یونس شہر پر اپنے حملے تیز کر دیے ہیں جہاں ان کا خیال ہے کہ حماس کے سینیر رہ نما زیر زمین سرنگوں میں چھپے ہوئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں