فلسطینی ٹیم کی ایشین کپ فٹ بال میں تاریخی جیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ہانگ کانگ کے خلاف صفر کے مقابلے میں تین گول کی فتح فلسطین نیشنل فٹ بال ٹیم کے لیے اس لیے بھی تاریخی تھی کہ یہ ان کی پہلی جیت تھی اور تیسری پوزیشن کی چار بہترین ٹیموں میں سے ایک ٹیم کا درجہ حاصل کر کے 16 ٹیموں میں شامل ہونے کا موقع تھا۔

دوحہ میں ہونے والے مقابلوں میں فلسطینی کھلاڑی عدی الدباغ دو گول کے ساتھ ہیرو بن گئے اور جب ریفری نے میچ ختم ہونے کی سیٹی بجائی تو فلسطینی کھلاڑیوں اور عملے نے ایک دوسرے کو فرط جذبات سے گلے لگایا اور اپنا جھنڈا لہراتے ہوئے جشن منایا۔

متحدہ عرب امارات گروپ سی میں متحدہ عرب امارات کی ٹیم فاتح ایران سے دو کے مقابلے میں ایک سے ہارنے کے باوجود دوسرے نمبر پر رہی۔

ایشین کپ میں کامیابی کی اہمیت

فلسطینی ٹیم نے یہ کامیابی ایک ایسے موقع پر حاصل کی ہے جب غزہ کے علاقے میں اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ ہو رہی ہے اور وہاں بڑے پیمانے پر ہونے والی ہلاکتوں پر دنیا بھر میں آوازیں اٹھ رہی ہیں۔

اس جنگ میں کئی کھلاڑی اور عملے کے ارکان اپنے پیاروں کو کھو چکے ہیں۔

ٹیم کے کپتان مصعب البطاط کا اس موقع پر کہنا تھا کہ ٹیم کے کھلاڑیوں نے فلسطینی عوام سے کیا ہوا وعدہ پورا کر دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ میں ان تمام لوگوں کا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں جنہوں نے ہماری حمایت کی۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم ان لوگوں کے چہروں پر مسکراہٹ لانے میں کامیاب ہو گئے ہیں جو فلسطین کے اندر اور باہر ہمیں فالو کرتے ہیں۔

میچ کے اختتام سے چند لمحے پہلے خاموشی طاری تھی اور اس جیت کے بعد فضا آزاد فلسطین کے نعروں سے گونج اٹھی۔

ہانگ کانگ اور فلسطین سے زیادہ کسی اور ٹیم نے ایشین کپ کے میچ جیتے بغیر نہیں کھیلے۔ ہانگ کانگ 12 بار اور فلسطین 8 مرتبہ اس مرحلے کے میچ جیت چکے ہیں۔ لیکن یہ فتح دونوں میں سے کسی ایک ٹیم کو 16 ٹیموں کے گروپ میں اپنی جگہ بنانے کا موقع فراہم کرے گی۔

فلسطین نیشنل فٹ بال ٹیم کب قائم ہوئی؟

فلسطین کی قومی فٹ بال ٹیم کا نام فلسطین فٹ بال ایسوسی ایشن (پی ایف اے) کے نام پر رکھا گیا ہے، جس کی بنیاد یہودی کھیلوں کی تنظیم ’میکابی ورلڈ یونین‘ کے رہنما یوسف یکوتیلی نے 1928 میں رکھی تھی۔

اس نام کا انتخاب فیفا کی رکنیت کا اہل ہونے کے لیے کیا گیا تھا، جس کے لیے ٹیموں کو اپنے ملک کی آبادی کی نمائندگی کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔

’منڈیٹری فلسطین فٹ بال فیڈریشن‘ نے، جو براعظم میں ایشین فٹ بال کنفیڈریشن اور دنیا بھر میں فیفاکے زیر انتظام ہے، 1934 میں فٹ بال ورلڈ کپ اور 1938 میں فیفا ورلڈ کپ کے لیے کوالیفائنگ راؤنڈز میں حصہ لیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں