سعودی ڈاکٹر مناہل ثابت دولت مشترکہ تنظیم کی سیکرٹری جنرل کی خصوصی سفیر منتخب

ڈاکٹر مناہل عبدالرحمن ثابت ، شاہ عبدالعزیز سٹی فار سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے صدر کی مشیر کے ساتھ ساتھ کئی دیگر عہدوں پر فائز ہیں اور بہت سے اعزازات حاصل کر چکی ہیں۔

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اقوام متحدہ کی دولت مشترکہ کی سیکرٹری جنرل، بیرونس پیٹریشیا سکاٹ لینڈ نے، جمعرات کو، سائنس اور ٹیکنالوجی کے شعبوں میں تنظیم کے سیکرٹری جنرل کے خصوصی ایلچی کے طور پر ڈاکٹر مناہل عبدالرحمن ثابت کا انتخاب کیا۔ سعودی پریس ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، انتخاب ان کے وسیع تجربے، سائنسی کامیابیوں، قیادت، حوصلہ افزائی اور سائنس اور ٹیکنالوجی کے شعبوں میں شراکت کی وجہ سے کیا گیا۔

دولت مشترکہ ممالک کی تنظیم میں دنیا بھر میں 2.5 بلین سے زیادہ آبادی والے 56 ممالک شامل ہیں، اور یہ تنظیم پائیدار ترقی، جدید ٹیکنالوجی، بقائے باہمی اور امن کے اہداف کے حوالے سے لوگوں کے درمیان قریبی افہام و تفہیم لانے کی کوشش کرتی ہے۔ یہ اشرافیہ کے سیاسی اور سائنسی حلقوں میں سب سے باوقار تنظیموں میں سے ایک سمجھی جاتی ہے۔

ڈاکٹر مناہل پائیدار ترقی کے اہداف کے حصول کے لیے تنظیم کے رکن ممالک کو باقی ممالک کے ساتھ جوڑیں گی۔

ڈاکٹر مناھل عبدالرحمن ثابت
ڈاکٹر مناھل عبدالرحمن ثابت

ڈاکٹر ثابت کو اہل ترین سعودی شہریوں میں شمار کیا جاتا ہے اور وہ شاہ عبدالعزیز سٹی فار سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے صدر کی مشیر، اقتصادی فورم برائے پائیدار ترقی کی صدر، کنسورشیم کنسلٹنگ کمپنی کی بانی اور صدر کے ساتھ ساتھ ایک مشاورتی کمپنی گلوبل آئی کیو فاؤنڈیشن کی صدر ہیں۔ جو اقتصادی ترقی، معلوماتی بینکوں اور عالمی دور اندیشی کے لیے ٹولز اور ٹیکنالوجیز فراہم کرتی ہے۔وہ گلوبل انٹیلی جنس نیٹ ورک کی نائب صدر، امپیریل کالج میں انسٹی ٹیوٹ آف برین کیمسٹری اینڈ ہیومن نیوٹریشن کی ڈپٹی ڈائریکٹر اور یونائیٹڈ کنگڈم میں گفٹڈ اکیڈمی کی ڈپٹی ڈین کے طور پر بھی کام کرتی ہیں۔

ڈاکٹر مناہل، نے مشرق وسطیٰ میں ذہنی صلاحیتوں کو بہتر بنانے میں مہارت رکھنے والے پہلے مرکز کی بنیاد رکھی تھی، جسے تھنک ہب کہتے ہیں، اور اس کے ذریعے بہت سے لوگوں کی زندگیوں کو مثبت، موثر اور متاثر کن انداز میں متاثر کرنے میں کامیاب رہی۔

انہوں نے بہت سے ایوارڈز اور اعزازات بھی حاصل کیے، انھیں برین آف دی ایئر ایوارڈ، براعظم ایشیا کی نمائندگی کرنے والا جینئس آف دی ایئر ایوارڈ، سائنس کے شعبے میں مشرق وسطیٰ کا اچیومنٹ ایوارڈ، سائنسی ترقی کے لیے عرب خواتین کا ایوارڈ، اور بین الاقوامی امن انعام بھی دیا گیا۔

انہیں فنانشل انجینئرنگ اور مقداری ریاضی میں امتیاز کے ساتھ ڈاکٹریٹ حاصل کرنے والی سب سے کم عمر عرب محقق کے طور پر گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں شامل کیا گیا۔

وہ دنیا کی 500 طاقتور ترین عرب خواتین، مشرق وسطیٰ کی 100 طاقتور ترین خواتین میں بھی شامل تھیں، اور سائنس کے میدان میں دنیا بھر کی 100 سب سے متاثر کن خواتین کی بی بی سی کی فہرست میں بھی شامل تھیں۔ سپر اسکالر کی طرف سے 30 ذہین ترین افراد کی درجہ بندی میں بھی انہیں رکھا گیا۔ انہوں نے فریڈم آف لندن، آفس آف لیوری، اور نائٹ آف سینٹ کیتھرین کا ٹائٹل بھی جیتا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں