ننھا سعودی "ماڈل" زید جس نے امریکی فیشن کمپنیوں کو حیران کر دیا

"جب زید 4 سال کا تھا، ہم نے ان کے نئے کپڑے خریدنے کے شوق اور تصاویر لینے کی خواہش کو دیکھا۔": والدہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

امریکہ میں سعودی طالبہ بسمہ الخنجر نے کبھی سوچا بھی نہیں تھا کہ اس کا بچہ زید الشمری (8 سال) تین مشہور امریکی فیشن کمپنیوں میں فیشن ماڈل بن سکتا ہے۔ الجوف یونیورسٹی سے اسکالرشپ پر امریکہ میں تعلیم کے دوران، بسمہ اور ان کے شوہر نے ننھے زید کے ملبوسات، تصاویر لینے اور انہیں اپنے نجی البم میں رکھنے کے شوق کو محسوس کیا، اور فیصلہ کیا کہ وہ اسے جاری رکھنے میں اس کی مدد کریں گے۔


کیا تم ماڈل ہو

العربیہ ڈاٹ نیٹ کو دیے گئے ایک انٹرویو میں زید کی والدہ بسمہ نے اس سفر کے آغاز کے بارے میں بتایا کہ "میں اور اس کے والد اسے جہاں بھی لے جاتے تھے لوگ اس سے پوچھتے کہ کیا تم ماڈل ہو؟ کیا تمہارا کوئی چینل ہے؟ وہ ایک حیرت انگیز بچہ ہے ، اس کی اعلیٰ خوداعتمادی، اور اس کے باتیں اس کی عمر سے بڑی ہیں۔خاص طور پر اس کے گھنگریالے بالوں نے بھی اسے مقبول بنانے میں مدد کی، جس کی وجہ سے ہم اس کی صلاحیتوں کو فروغ دیتے رہے۔"


ابتدائی رجحان

بسمہ کے مطابق، زید کے سفر کا آغاز اس وقت ہوا جب وہ 4 سال کا تھا، جب ہم نے اس کے نئے کپڑے خریدنے کے شوق اور تصویر بنانے کی خواہش کو دیکھا۔ میں اور اس کے والد نے اس کی حوصلہ افزائی کی اور ہر طرح سے اس کا ساتھ دیا۔ یہاں تک کہ اسکول میں اس کے اساتذہ نے بھی اس سلسلے میں خاصی دلچسپی ظاہر کی۔"

اس کے بعد "ہم نے زید کی تصاویر اور ویڈیو کلپس ایک کمپنی کو بھیجے اور ایک دن کے اندر انہوں نے مجھ سے رابطہ کیا ، اپنےدفتر آنے اور ان کے ساتھ معاہدہ کرنے کو کہا، اس کس بعد دو دیگر کمپنیوں نے بھی اس کے ساتھ معاہدہ کرنے کی درخواست کی۔ "

بچے کو مضبوط شخصیت ہونا چاہئے

بسمہ کا کہنا ہے کہ "کیمرہ کے سامنے ظاہری شکل اور زبردست موجودگی بطور ماڈل انتخاب کے لیے سب سے اہم شرائط میں سے ہیں، اس کے علاوہ بچے کوایک مضبوط شخصیت ہونا چاہئے اور یہ کہ بچے کی شخصیت متضاد یا غیر سماجی نہیں ہونی چاہیے تاکہ وہ فوٹوگرافروں کے ساتھ آرام سے گھل مل سکے۔ اگر بچے کو ٹیلی ویژن کا کوئی کام کرنے کے لیے کہا جائے تو اسے کام کرنے کے لیے تیار رہنا چاہیے۔ ایک اہم ترین کام جس کے لیےمکمل طور پر تیار رہنا چاہئے وہ ہے سفر اور فوٹو گرافی ، چاہے بین الاقوامی برانڈز کے لیے ہوں یا ٹیلی ویژن کے پروگراموں کے لیے، یہ کسی بھی وقت، ہم سے رابطہ کر سکتے ہیں۔"

بسمہ نے خواہش ظاہر کی کہ ان کا بیٹا ایک دن مشہور ترین ماڈلز اور اداکاروں میں سے ایک ہوگا، اور اپنے ملک کی نمائندگی کرے گا۔"

مقبول خبریں اہم خبریں