فلسطین اسرائیل تنازع

7 اکتوبر سے غزہ پر اسرائیلی حملوں میں کم از کم 26,083 فلسطینی ہلاک: وزارت صحت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

غزہ کی وزارتِ صحت نے جمعہ کو ایک بیان میں کہا کہ 7 اکتوبر سے غزہ پر اسرائیلی حملوں میں کم از کم 26,083 فلسطینی جاں بحق اور 64,487 زخمی ہو چکے ہیں۔

وزارت نے مزید کہا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران اسرائیلی حملوں میں تقریباً 183 فلسطینی جاں بحق اور 377 زخمی ہوئے۔

7 اکتوبر کو مزاحمت کاروں کے اسرائیل پر حملے میں 1,200 افراد کو ہلاک ہو گئے جن میں سے زیادہ تر عام شہری تھے اور 200 سے زیادہ کو یرغمال بنا کر وہ غزہ واپس لے گئے جس کے بعد اسرائیل نے حماس کے خاتمے کے لیے اپنی مہم کا آغاز کر دیا۔

ہلاکتوں کا خمیازہ بھگتنے والے شہریوں کو بچانے کے لیے فوری طور پر بین الاقوامی جنگ بندی کی اپیلیں کی گئیں لیکن اسرائیل کے کان پر جوں تک نہ رینگی اور اس نے اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ وہ حماس کے خاتمے اور تمام یرغمالیوں کو آزاد کروا لینے تک ہمت نہیں ہارے گا۔

حماس کہتی ہے کہ کسی بھی معاہدے کا انحصار اسرائیل کے حملہ اور محاصرہ ختم کرنے اور غزہ کی پٹی سے انخلاء پر ہونا چاہیے۔

ذرائع نے رائٹرز کو بتایا کہ ایک ماہ طویل جنگ بندی پر ثالثی دوبارہ شروع ہو گئی ہے جس میں اسرائیل میں فلسطینی قیدیوں کے تبادلے میں اسرائیلی یرغمالیوں کی رہائی کا عمل ہو سکتا ہے لیکن اس جنگ کو ختم کرنے کے طریقۂ کار پر فریقین کے اختلافات نے ایک مشکل پیدا کر دی ہے۔

جمعرات کو ایک عہدیدار نے رائٹرز کو بتایا کہ اسرائیل کی موساد انٹیلی جنس سروس اور امریکی سینٹرل انٹیلی جنس ایجنسی کے ڈائریکٹرز اس ہفتے کے آخر میں یورپ میں قطر کے وزیر ِاعظم سے ملاقات کریں گے تاکہ غزہ کی پٹی میں جنگ بندی اور یرغمالیوں کی رہائی پر تبادلۂ خیال کیا جا سکے۔

غزہ کے تنازعے سے شرقِ اوسط کے غیر مستحکم ہونے کا خطرہ ہے جس سے اسرائیل کے مقبوضہ مغربی کنارے سے لے کر اسرائیل-لبنان کے سرحدی علاقے، شام، عراق اور بحیرۂ احمر میں بین الاقوامی تجارت کے لیے نقل و حمل کی اہم گذرگاہ تک دشمنی پھیل رہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں