حوثی ملیشیا کا امریکی جنگی بحری جہاز پر حملے کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن کے ایرانی حمایت یافتہ حوثی عسکریت پسندوں نے خلیج عدن میں ایک امریکی بحری جہاز پرمیزائل فائر کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

سات اکتوبر کو غزہ کی پٹی میں اسرائیل کی طرف سے شروع کی گئی جنگ کے بعد پیدا ہونے والی کشیدگی میں یہ خطے میں تازہ ترین واقعہ ہے۔

حوثی فوج کے ترجمان یحیی الساری نے پیرکو ایک بیان میں کہا کہ ان کی تنظیم نے امریکی بحریہ کے جہاز لیوس بی پر خلیج عدن میں کل اتوار کے روز میزائل داغا ہے جس میں ان کے بہ قول جہاز کو نقصان پہنچا۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ "اس جہاز کا ایک مشن یمن پر حملے شروع کرنے میں حصہ لینے والی امریکی افواج کو لاجسٹک مدد فراہم کرنا ہے"۔

انہوں نے اس بات کی بھی نشاندہی کی کہ "یہ حملہ یمن کے دفاع اور فلسطینی عوام کی حمایت کےطور پر کیا گیا ہے۔"

انہوں نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اسرائیلی جہاز رانی یا بحیرہ احمر میں اسرائیلی بندرگاہوں کی طرف جانے والے جہازوں پر حملوں کا سلسلہ جاری رہے گا۔

کل اتوار کو امریکی بحریہ کے سکریٹری کارلوس ڈیل ٹورو نے زور دے کر کہا تھا کہ ان کا ملک حوثیوں کے ٹھکانوں پر حملے جاری رکھے گا۔ انہوں نے کہا کہ آپریشن کا دورانیہ ایران کی طرف سے حوثی گروپ کو فراہم کی جانے والی امداد پر منحصرہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں