عالمی عدالت انصاف نے میرے الفاظ کو توڑ مروڑ کر پیش کیا: اسرائیلی صدر کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسرائیل کے صدر اسحق ہرزوگ نے بین الاقوامی عدالت انصاف پر اتوار کے روز الزام لگایا ہے کہ بین الاقوامی عدالت انصاف نے اپنے فیصلے میں میرے الفاظ کو غلط پیش کیا ہے۔

اسرائیلی صدر اسحٰق ہرزوگ کا کہنا ہے کہ میں نے فلسطینیوں کے تحفظ اور غزہ میں ہونے والی نسل کشی کو روکنے کے لیے اقدامات کا کہا تھا۔

بین الاقوامی عدالت انصاف کے جمعہ کے روز سامنے آنے والے فیصلے میں اسرائیلی رہنماؤں کے فلسطینیوں کے خلاف اشتعال انگیزی اور غیر انسانی زبان استعمال کرنے کا ذکر کیا گیا ہے۔ انہیں میں اسرائیلی صدر اسحاق ہرزوگ کے وہ بیانات بھی شامل ہیں جو سات اکتوبر کے بعد انہوں نے دیے ہیں۔

اسرائیلی صدر کا کہنا ہے کہ 12 اکتوبر کو ہونے والی نیوز کانفرنس میں سے صرف اس بات 'ایک پوری قوم اس قتل عام کی ذمہ دار ہے' کو لیا گیا ہے جبکہ اس بات کو نظر انداز کر دیا گیا کہ 'معصوم شہریوں کو قتل کرنے کا کوئی عذر نہیں ہے اور اسرائیل جنگ کے بین الاقوامی قوانین کا احترام کرے گا۔'

اسرائیلی صدر اسحاق ہرزوگ نے مزید کہا کہ مجھے ناگوار گزرا ہے کہ میرے الفاظ کو تروڑ مروڑ کر پیش کیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں