غزہ میں سرنگوں کی تباہی مستقبل کی انتظامیہ کی ذمہ داری ہو گی: اسرائیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل کی قومی سلامتی کونسل کے سربراہ زاچی ہنگبی نے کہا ہے کہ غزہ کی پٹی میں "غیر تزویراتی" سرنگوں کو تباہ کرنا پٹی پر موجودہ جنگ کے مقاصد میں شامل نہیں ہے۔ سرنگوں کو موجودہ جنگ میں ختم کرنا مشکل ہے، مستقبل کی انتظامیہ سرنگوں سے نمٹنے کی ذمہ دار ہو گی۔

اسرائیلی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق انہوں نے کنیسٹ میں خارجہ امور اور سلامتی کمیٹی کے سامنے اپنی تقریر کے دوران کہا کہ ان سرنگوں کو تباہ کرنے کا کام جنگ کے بعد غزہ کی پٹی کا انتظام کرنے والے فریق کی ذمہ داری ہو گی۔

امریکی اخبار ’وال اسٹریٹ جرنل‘ کی طرف سے شائع ہونے والی ایک رپورٹ کے جواب میں کہ غزہ کی 80 فیصد سرنگیں اب بھی برقرار ہیں۔

ہنگبی نے کہا کہ "موجودہ مرحلے میں اسرائیل ان سرنگوں سے نہیں نمٹ سکے گا۔ انہوں نے ان سرنگوں کو غیر سٹرٹیجک قرار دیتے ہوئے کہا کہ سرنگوں کو آئندہ کی انتظامیہ کو ختم کرنے کے لیے کام کرنا ہو گا"

ہنگبی نے کہا کہ فوج نے ان سرنگوں کو تباہ کر دیا ہے جنہیں اسٹریٹجک درجے میں رکھا گیا تھا۔

اسرائیلی براڈکاسٹنگ کارپوریشن نے کہا کہ کنیسٹ کی خارجہ امور اور سلامتی کمیٹی کے ارکان نے ہنگبی کے بیانات پر ناراضگی کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ انہیں یقین نہیں ہے کہ غزہ کی پٹی کا انتظام کرنے والی نئی انتظامیہ سرنگوں کو تباہ کرنے میں دلچسپی لے گی۔

یہ بیانات امریکی اور اسرائیلی حکام کے اندازوں کے بعد سامنے آئے ہیں جن میں ان کا کہنا ہے کہ 80 فیصد تک سرنگیں اب بھی کسی حد تک برقرار ہیں۔

وال اسٹریٹ جرنل کی حالیہ رپورٹ کے مطابق دونوں ممالک کے حکام نے اندازہ لگایا ہے کہ 20 سے 40 فی صد کے درمیان سرنگیں خراب یا ناکارہ کر دی گئی ہیں۔ ان میں سے زیادہ تر شمالی غزہ میں ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں