دہشت گردی کا جرم، سعودی شہری کی سزائے موت پر عمل درآمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب کے مشرقی صوبے سے تعلق رکھنے والے شخص کو دہشت گردی کے اقدام کے ارتکاب کی بنیاد پر منگل کے روز موت کے گھاٹ اتار دیا گیا یے۔ یہ اطلاع سعودی وزارت داخلہ نے ایک بیان میں دی ہے۔

عون بن حسن بن رضی الابو عبداللہ عدالت نے دہشت گردی کے اقدام میں ملوث ہونے کی بنیاد پر موت کی سزا سنائی تھی۔جس کے خلاف اس کی سعودی سپریم کورٹ نے اپیل سنی۔

تاہم اپیل مسترد ہونے کے بعد عون بن حسن کی سزائے موت کے فرمان پر منگل کے روز عمل کر دیا گیا ہے۔ اس کے خلاف سیکیورٹی فورسز کے اہلکاروں پر حملوں میں شریک رہنے کاالزام تھا۔ یہ دہشت گردوں کے ایک گروہ سے وابستہ تھا۔

اس پر یہ بھی الزام تھا کہ اس نے دھماکہ خیز مواد کی تیاری میں بھی حصہ لیا تھا۔ نیز یہ دھماکہ خیز مواد قانون کو مطلوب افراد تک پہنچایا تھا۔

عون بن حسن پر یہ بھی الزام تھا کہ اس نے دہشت گردی کے لئے فنڈز فراہم کرنے میں کردار ادا کیا تھا۔ ان الزامات کے ثابت ہونےپر عدالت نے اسے سزائے موت سنائی تھی۔جس پر ایک روز پہلے عمل درآمد کر دیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں